محلے کا اسٹور کیوں نہیں؟ – صہیب جمال

محلے کا اسٹور کیوں نہیں؟ – صہیب جمال

زندگی میں صرف ایک دفعہ سپر اسٹور گیا ہوں۔

میرا مشاہدہ یہ ہے کہ وقت کا زیاں ہے سب سے بڑھ کر یہ ہے کہ آپ کی گروسری کا ماہانہ خرچہ بنتا ہے تیرہ ہزار اور آپ خرچ کر آتے ہیں بیس ہزار کیونکہ یہ انسان کی نفسیات ہے سامنے لگی رنگین چیزیں کشش دیتی ہیں ۔

ساتھ آپ اپنے بیوی بچوں کو لے کر جاتے ہیں اور بچوں کو آپ فالتو چیزوں کی خریداری سے روک نہیں سکتے ہیں اور کچھ بیگمات یہ نہیں سوچتی ہیں کہ وہ مختلف چیزیں کیوں خرید رہی ہیں ؟

ان اسٹور کے باہر پارکنگ کے مسائل ، آتی جاتی گاڑیوں کو مشکلات ، کراچی میں تو یہ بھی مصیبت ہے گاڑیوں کے سائیڈ مرر ، بیٹری ، کار ٹیپ بھی چوری ہو جاتے ہیں ، میرے دوست کی گاڑی ناظم آباد امتیاز سے چوری ہوئی اور چار دن بعد ملی ۔

آپ لوگ گروسری اسٹورز جاتے کیوں ہیں؟

یہ بھی پڑھیں: پاکستان میں بننے والی گاڑیوں کے سیفٹی سٹینڈرڈز کا معاملہ حل ہو سکے گا؟

خواتین سمجھتی ہیں کہ یہ ان کی آؤٹنگ ہے ، بچے سمجھتے ہیں کہ ان کی چھوٹی موٹی خریداری کا دن ہے اور مرد حضرات اگر مجھ جیسے ہیں تو سوچتے ہیں چار چھ ہزار زیادہ دے کر کچھ آنکھیں ٹھنڈی ہو جائیں گی ۔

سب سے بڑھ کر یہ کہ خواتین جب مل کر بیٹھتی ہیں تو بڑے فخر سے بتاتی ہیں کہ ہم نے فلاں بڑے اسٹورز سے خریداری کی ہے ۔ یعنی صرف دکھاوا ۔۔۔
مجھے تو قطار لگا کر رقم دینے والے لوگوں پر بڑا رحم آتا ہے ، سپر اسٹور کی گلیوں میں ٹرالی کھینچتے شوہروں پر ہنسی آتی ہے ، ان کی اس وقت شکلیں دیکھنے کے قابل ہوتی ہیں جب کیش کاؤنٹر پر رقم ان کی جیب سے زیادہ بنتی ہے ، بیچارے شرما حضوری میں چیزیں واپس بھی نہیں کر پاتے کہ ان کو برابر یا پیچھے کھڑا شخص کنگلا کہے گا ۔

پاکستان ٹرائب کا یوٹیوب چینل سبسکرائب کریں

اس راشن کی خریداری میں آرام سے تین چار گھنٹے لگتے ہیں ، سوچیں یہ تین سے چار گھنٹے عموماً لوگ مہینے میں دو دفعہ خرچ کرتے ہیں یہی وقت آپ اپنے بچوں کی کسی مثبت تربیت میں خرچ کرسکتے ہیں ، فیملی کے ساتھ کہیں اچھی جگہ گھوم سکتے ہیں، کسی ناراض رشتے دار کو منا سکتے ہیں، خاندان کے کسی بزرگ کو سلام کرنے جا سکتے ہیں ۔

اب آپ ایک کام کریں کسی دن سپر اسٹور کا بل ہاتھ میں پکڑیں اور محلے کی دوکان سے انہی اشیاء کے ریٹ لیں یقین کریں چند سو روپے بمشکل بچتے ہیں اس کے بدلے آپ بہت وقت ، انرجی ، بجٹ سے بڑھ کر رقم خرچ کر آتے ہیں ۔

ہم اب بھی محلے کے دوکاندار کو لسٹ پکڑاتے ہیں اور وہ ہمارے کچن کے اندر تک سامان پہنچا کر جاتا ہے ، کوئی چیز معیاری نہ ہو فوراً بدل کر بھیج دیتے ہیں۔

عزت سے خریداری کرو بھیا، قطار لگا کر چیزیں کیوں خریدتے ہو ؟

پاکستان ٹرائب کی خبریں/ویڈیوز/بلاگز حاصل کرنے کے لیے واٹس ایپ پر ہمارے ساتھ شامل ہوں

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *