کراچی کیسے ڈوبا؟ – قاضی نصیر عالم

کراچی کیسے ڈوبا؟ – قاضی نصیر عالم

کے پی ٹی فلائی اوور سے ذرا آگے جو کشادہ شاہراہ آپ کو سیدھا سی ویو لے کر جاتی ہے، تین دہائیوں پہلے تک یہ ڈی ایچ اے کی سرحد تھی اس کے برابر سے قیوم آباد تک سینکڑوں فٹ کشادہ ندی کا پاٹ تھا۔

بارشوں میں بلوچ کالونی سے اختر کالونی تک کی آبادیوں کا پانی اسی راستے سے سمندر میں گرتا تھا۔۔ پھر کسی کے زرخیز دماغ میں اسے پاٹ کر نئے فیز بنانے کا خیال آیا۔

آج کل اس ندی پر فیز سیون ایکسٹینشن اور فیز ایٹ ایستادہ ہے ۔۔یہ اس شہر میں پہلی “چائنہ کٹنگ “ تھی۔ متحدہ کے مصطفی کمال چائنہ کٹنگ کے بانی نہیں اس کے پیروکار تھے اسی آئیڈیے کو انہوں نےپورے شہر پر مسلط کیا۔

یہ بھی پڑھیں: بارش ختم ہونے کے بعد کراچی کے مکین نئی مشکل کا شکار

پھر جس کا جہاں زور چلا اس نے وہاں اپنا کام دکھایا۔۔ اورنگی کا نالہ اگر متحدہ نے بیچ کھایا تو بنارس کا نالہ اے این پی نے کھایا۔۔ ان دو نالوں پر تجاوزات کی بدولت اورنگی کا بڑا علاقہ پانی میں ڈوبا رہا۔ ۔اور اس میں وہ محلے بھی شامل تھے جہاں لسانی فسادات میں بدترین قتل عام ہوا تھا۔

شہر سے پانی کے اخراج کے ہر قدرتی راستے اور نالے کی یہی کہانی ہے۔ ڈھائی سو فٹ کے نالے پانچ فٹ کی نالیوں میں بدل چکے ہیں۔۔۔ شہر ڈوبنے کی سب سے بڑی وجہ یہی تھی۔

پاکستان ٹرائب کا یوٹیوب چینل سبسکرائب کریں

اب آئندہ دنوں میں گجر نالے پر دوبارہ توڑ پھوڑ ہوتی دیکھیں گے، شاید باقی ندی نالے بھی اس زد میں آئیں۔۔ لیکن سپریم کورٹ اور ایک بڑے اخبار کی کار پارکنگ، بڑے کمرشل پلازوں کے علاوہ ڈی ایچ اے کی ایکسٹینشن اس سے مستشنٰی ہوں گی۔۔ یہ دو قومی نظریہ ہے اس پہ کڑھنے کی ضرورت نہی۔۔۔ عربی عجمی کی تفریق نا بھی ہو تو شودر برھمن کی تفریق بہرحال مسلم ہے۔

باقی پوری دنیا اس وقت موسمی تغیرات کی زد میں ہے آئندہ کئی سالوں تک کراچی میں بارشوں میں اضافہ ہی ہوتا رہے گا۔۔ اور بارشوں میں بحریہ ٹاون سے نادرن بائ پاس تک پھیلتی آبادی کی غلاظت وصول کرنے کو شہر کا قدیمی حصہ ہی بچے گا۔۔ پانی سر سے گزرنا اس دن سمجھ آئے گا۔

پاکستان ٹرائب کی خبریں/ویڈیوز/بلاگز حاصل کرنے کے لیے واٹس ایپ پر ہمارے ساتھ شامل ہوں

قاضی نصیر عالم

افسانوں کی کتاب ’کچے رنگوں کی محبت’ کے مصنف قاضی نصیر عالم میڈیا سائنسز میں انگلینڈ سے اعلی ڈگری حاصل کرچکے ہیں۔ دو دہائیوں سے زائد عرصے سے پاکستان میں صحافت سے وابستہ رہنے والے قاضی نصیر عالم سینئر پاکستانی صحافی ہیں جو سماجی، سیاسی اور تاریخی موضوعات پر لکھتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *