نوجوانوں کے لیے پنجاب حکومت کے ہنرمند نوجوان پروگرام میں کیا خاص ہے؟

نوجوانوں کے لیے پنجاب حکومت کے ہنرمند نوجوان پروگرام میں کیا خاص ہے؟

لاہور: پنجاب حکومت کی جانب سے اعلان کیا گیا ہے کہ صوبائی ادارے ‘ٹیکنیکل اینڈ ووکیشنل ٹریننگ اتھارٹی’ (ٹیوٹا) کے تحت ہزاروں نوجوانوں کو درجنوں مختلف شعبوں کی تربیت دی جائے گی۔

ہفتہ کو وزیراعلی پنجاب سردار عثمان بزدار نے اعلان کیا کہ ڈیڑھ ارب روپے کی لاگت سے ہنرمند نوجوان پروگرام کے تحت 56 مختلف شعبوں میں ایک لاکھ اضافی نوجوانوں کو تربیت دی جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں: ایک پی ٹی آئی وزیر کارکردگی پوچھنے پر جھنجھلا گئے، دوسرے کو انڈا پڑ گیا

ہنر مند نوجوان پروگرام کے متعلق وزیراعلی پرامید دکھائی دیے کہ ایسا کرنے سے ہنرمند افرادی قوت کی ضرورت پوری ہو سکے گی۔

کن شعبوں میں تربیت دی جائے گی؟

ہنر مند نوجوان پروگرام کے تحت امیزون کے لیے ورچوئل اسسٹنٹس، روبوٹکس اور آرٹیفیشل انٹیلی جنس جیسے شعبے شامل ہیں۔

گزشتہ ادوار حکومت میں بھی اسکلز ڈویلپمنٹ پروگرام کے تحت ہزاروں نوجوانو کو ووکیشنل ٹریننگ دی جاتی رہی ہے تاہ یہ کورسز کرنے والے افراد کا کہنا ہے کہ ان کے لیے ملازمت کے مواقع نہیں ہے تو تربیت کا کیا کریں؟

یہ بھی جانیں: پنجاب کے اسکولوں میں موسم سرما کی تعطیلات کا نیا نوٹیفکیشن جاری

ہنر مند نوجوان پروگرام کیوں؟

پنجاب حکومت کے مطابق ہنرمند نوجوان پروگرام وزیراعظم کے اعلان کردہ ایک کروڑ نوکروں کے ویژن کے تحت اٹھایا گیا قدم ہے۔ پروگرام کے تحت مزید ایک لاکھ نوجوانوں کو 56 مختلف کورسز بلامعاوضہ کرائے جائیں گے۔

چیئرپرسن ٹیوٹا علی سلمان صدیقی کا اپنے پیغام میں کہنا تھا کہ ٹیوٹا کے نئے ویژن، اسٹریٹیجی اور ہنر مند نوجوان پروگرام کے ذریعے پنجاب میں نیو اسکل ایکو سسٹم قائم کرنا چاہتے ہیں۔

پنجاب حکومت کے تحت نئے کورسز ملازمتوں کے لیے درکار صلاحیتوں کی بنیاد پر ترتیب دیے گئے ہیں۔ کورس کرنے والوں کو مقامی اور بین الاقوامی مارکیٹ میں انٹرپرنیورشپ اور ملازمتوں کے مواقع فراہم کیے جائیں گے۔ یہ نہیں بتایا گیا کہ پہلے سے تربیت حاصل کرنے والے نوجوانوں کے لیے ملازمتوں کی فراہمی کا کیا انتظام کیا گیا ہے۔

سدف رحمان پرامید ہیں کہ ملازمتوں کے لیے مطلوب معیار کے مطابق تربیت کی فراہمی نوجوانوں کو جابز دلا سکے گی
سدف رحمان پرامید ہیں کہ ملازمتوں کے لیے مطلوب معیار کے مطابق تربیت کی فراہمی نوجوانوں کو جابز دلا سکے گی

فاونڈیشن فار یوتھ ایمپلائمنٹ پاکستان کی کنٹری ڈائریکٹر سدف رحمان کے مطابق یہ ایک بین الاقوامی نوعیت کا پروگرام ہے جس کے تحت 32 ہزار نوجوانوں کو 13 مختلف ملکوں میں ملازمتیں فراہم کی ہیں۔ اپنے پیغام میں ان کا کہنا تھا کہ پروگرام کے ذریعے بیروزگار نوجوانوں کو وہ صلاحیتیں سکھائی جائیں گی تاکہ وہ مارکیٹ میں موجود ملازمتوں کے معیار پر پورا اتر سکیں۔

پاکستان ٹرائب کا یوٹیوب چینل سبسکرائب کریں

پنجاب حکومت کے ہنرمند نوجوان پروگرام پر نوجوان کیا کہتے ہیں؟

حکومت کی جانب سے تفصیل کا اعلان کیے جانے کے بعد سوشل میڈیا واضح طور پر دو حصوں میں منقسم نظر آیا۔ حکومتی جماعت کے حامی صارفین نے اسے بہترین قدم قرار دیا تو خاصی تعداد ایسے افراد کی بھی رہی جو پہلے سے تربیت یافتہ افراد کے بیروزگار ہوتے ہوئے مزید ایسے افراد کی تیاری کو بیکار قرار دیتے رہے۔

یہ بھی دیکھیں: اب آن لائن نکاح بھی کیا جا سکے گا

وقار چوہدری نامی صارف نے لکھا کہ جو انجنیئرز پہلے سے بنے ہوئے ان کے لیے جاب کا سوچ لیں نیے کا بیڑا غرق بعد میں کیا جائے۔ انہوں نے طنز کرتے ہوئے کہا کہ ٹریننگ دے لینا، ملازمت کے وقت کہنا میرٹ لسٹ لگی ہے، سفارش پر رکھ لیا ہے، باقی جاؤ گھر’۔

کامران اکرم نامی صارف نے لکھا کہ اس سے پہلے جو لاکھوں طلبہ ووکیشنل ٹریننگ حاصل کر چکے ہیں انہیں تو ملازمت دے دیں۔

ہفتہ کو وزیراعلی پنجاب نے ہنرمند نوجوان پروگرام کے افتتاح کے لیے ٹیوٹا کے سابقہ گریجویٹس کے لیے ہونے والے کانووکیشن کا انتخاب کیا۔ کاووکیشن کی رجسٹریشن ملنے کے باوجود وی آئی پی شرکت کی وجہ سے پروگرام میں جانے کی اجازت نہ ملنے والے نوجوانوں نے شکوہ بھی کیا کہ انہیں باہر کھڑا کر کے تذلیل کے لیے بلایا گیا ہے۔

پاکستان ٹرائب کی خبریں/ویڈیوز/بلاگز حاصل کرنے کے لیے واٹس ایپ پر ہمارے ساتھ شامل ہوں

فوزان شاہد

مطالعہ اور لکھنے کا عمدہ ذوق رکھنے والے فوزان شاہد پاکستان ٹرائب کے ڈپٹی ایڈیٹر ہیں۔ وہ سیکیورٹی ایشوز سمیت سماجی، علاقائی اور بین الاقوامی امور پر لکھتے ہیں۔ Twitter: @FawzanShahid

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *