فیس بک نے پاکستانی سیاسی جماعت کا پیج اور اکاؤنٹس ڈیلیٹ کر دیے

فیس بک نے پاکستانی سیاسی جماعت کا پیج اور اکاؤنٹس ڈیلیٹ کر دیے

کراچی: سوشل نیٹ ورکنگ پلیٹ فارم فیس بک کی جانب سے پاکستانی سیاسی و مذہبی جماعت، جماعت اسلامی کا فیس بک پیج ڈیلیٹ اور ایڈمنز کے اکاؤنٹ معطل کر دیے ہیں۔

فیس بک کی جانب سے جماعت اسلامی کراچی کا آفیشل صفحہ بغیر کوئی وجہ بتائے اچانک پیر 9 دسمبر کو ڈیلیٹ کر دیا گیا۔

جماعت اسلامی پاکستان کے ڈائریکٹر سوشل میڈیا شمس الدین امجد نے رابطہ کرنے پر پاکستان ٹرائب کو بتایا کہ بغیر کیس وارننگ اور معقول وجہ کے پیج ڈیلیٹ کر دیا گیا ہے۔ پیج پر کی جانے والی سرگرمیوں کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ڈیلیٹ کیے گئے فیس بک صفحے سے پانچ اگست کے بعد سے مظلوم کشمیریوں کی حمایت کے لیے مسلسل مہم چلائی جا رہی تھی۔

جماعت اسلامی کراچی کے ڈیلیٹ کیے گئے فیس بک صفحے کا سکرین شاٹ

شمس الدین امجد کے مطابق فیس بک کا یہ اقدام ہیومن رائٹس ڈے سے ایک دن قبل ایک ایسے موقع پر کیا گیا ہے جب جماعت اسلامی 22 دسمبر کو اسلام آباد میں یکجہتی کشمیر مارچ کرنے جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ اپنی نوعیت کا کوئی پہلا واقعہ نہیں ہے، فیس بک انتظامیہ ماضی میں بھی کشمیریوں پر ڈھائے جانے والے انڈین مظالم کو دنیا کے سامنے لانے کی پاداش میں کئی پلیٹ فارمز کو ڈیلیٹ کر چکی ہے۔

جماعت اسلامی کے سینیٹر مشتاق احمد خان کی جانب سے فیس بک کے اقدام کی مذمت کرتے ہوئے ایک قرارداد بھی سینیٹ سیکرٹریٹ میں جمع کرائی گئی ہے۔ قرارداد میں کہا گیا ہے کہ فیس بک انتظامیہ کا یہ اقدام سخت متعصبانہ اور بھارتی لابی کے زیراثر کارروائی ہے۔ حکومت سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ اس متعصبانہ کارروائی کے خلاف ہر ممکن اقدام کرے۔

یہ بھی دیکھیں: پاکستانی وزیر کی اس وائرل تصویر میں کیا خاص ہے؟

جماعت اسلامی کے سربراہ سینیٹر سراج الحق نے گزشتہ ماہ آزاد کشمیر میں ہونے والے ایک جلسہ کے دوران حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا تھا وہ کشمیر کی مطابق واضح پالیسی اختیار کرے تا کہ پانچ اگست کے بھارتی اقدام کے بعد سے مسلسل کرفیو اور انسانی حقوق کی بدترین پامالیوں کا سامنا کرنے والے کشمیریوں کو مکمل اور غیر مشروط حمایت کا یقین دلایا جا سکے۔

فیس بک کی جانب سے صفحہ ڈیلیٹ کیے جانے پر کراچی میں جماعت اسلامی کے سوشل میڈیا ایکٹیوسٹس کی جانب سے احتجاج بھی کیا گیا جس میں خواتین بھی شریک رہیں۔

کراچی میں ہونے والے احتجاج کے دوران خواتی فیس بک کی پالیسیوں کے خلاف بینرز تھامے کھڑی ہیں۔

پاکستان کی جانب سے سوشل نیٹ ورکس کی انتظامیہ کو پہلے بھی شکایت کی جا چکی ہے کہ کشمیر میں ہونے والے بھارتی مظالم پر گفتگو کرنے والے اکاؤنٹس تسلسل سے بند کیے جا رہے ہیں۔ ان شکایات کے بعد ٹوئٹر کی جانب سے پاکستانی شکایات کے ازالہ کے لیے مقرر لائزان آفس تبدیل کرتے ہوئے اعلان کیا گیا تھا کہ آئندہ پاکستانی شکایات دبئی آفس کا عملہ نمٹایا کرے گا۔

سوشل میڈیا کے متعلق مزید: 2019 کا ایسا ہدف جو اب تک پورا نہ ہو سکا؟سوشل میڈیا کے دلچسپ جوابات

فیس بک مختلف اوقات میں من مانی سنسر شپ جیسی شکایات کا سامنا کرتا رہا۔ سوشل نیٹ ورکنگ سائٹ کی انتظامیہ اپنے اعلانات میں اقرار کرتی رہی ہے کہ وہ شفافیت کو ترجیح دیں گے تاہم ایسے واقعات اب بھی برقرار ہیں۔

جماعت اسلامی کراچی کا فیس بک صفحہ ڈیلیٹ کرنے پر سوشل میڈیا صارفین اپنی تشویش کا اظہار کر رہے ہیں

فیس بک کی جانب سے جماعت اسلامی کراچی کے فیس بک صفحے کے ڈیلیٹ کیے جانے کے بعد منگل 10 دسمبر کو سوشل میڈیا باالخصوص ٹوئٹر پر احتجاجی پیغامات بھی جاری کیے گئے ہیں۔ ٹوئٹر پر #Restore_JIKhiFbPage کے عنوان سے ٹرینڈ بھی بنایا گیا ہے۔ جس میں مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے سوشل میڈیا صارفین اپنے خیالات کا اظہار کر رہے ہیں۔

فیس بک کی جانب سے ایک سیاسی جماعت سے متعلق صفحے کو ڈیلیٹ کیے جانے کی کوئی باقاعدہ وجہ تاحال نہیں بتائی گئی ہے نا ہی اس بات کی تصدیق یا تردید کی گئی ہے کہ ڈیلیٹ کیا گیا صفحہ خودکار نظام کے تحت ہٹایا گیا ہے یا مینویل طریقے سے ختم کیا گیا ہے۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *