پی آئی اے کے مسافر کو ایک سگریٹ دس ہزار کا کیوں پڑا؟

پی آئی اے کے مسافر کو ایک سگریٹ دس ہزار کا کیوں پڑا؟

کراچی: پاکستان کی قومی ہواباز کمپنی پی آئی اے سے سفر کرنے والے ایک مسافر کو دوران پرواز سگریٹ پینے کی پابندی پر عمل نہ کرنے کی بھاری قیمت چکانا پڑ گئی۔

پیر نو دسمبر کو پیش آنے والے واقعے کے متعلق پی آئی اے کا کہنا ہے کہ فضائی عملے نے رضا احسن نامی مسافر کو دوران پرواز سگریٹ پیتے ہوئے پایا۔

پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائنز کے مطابق یہ قومی ہوا باز ادارے کی جانب سے کسی مسافر پر عائد کیا گیا اپنی نوعیت کا پہلا جرمانہ ہے۔

فلائٹ نمبر پی کے 792 کے مسافر سے ایئرپورٹ پر اترنے کے بعد پاسپورٹ ضبط کر لیا گیا تھا جو جرمانہ کہ رقم دس ہزار روپے ادا کرنے پر انہیں واپس ملا۔

پی آئی اے کی جانب سے سگریٹ پینے پر مسافر کو جرمانہ کی رسید
پی آئی اے کی جانب سے سگریٹ پینے پر مسافر کو جرمانہ کی رسید۔ فوٹو: سوشل میڈیا

پی آئی اے کی پرواز میں سگریٹ نوشی کرتے ہوئے رنگے ہاتھوں پکڑے جانے والے مسافر پر فلائٹ کے کیپٹن کی جانب سے جرمانہ عائد کیا گیا تھا۔

پی آئی اے کا کراچی سے ٹورنٹو کے لیے پرواز کا اعلان

یہ بھی دیکھیں: 2019 کا ایسا ہدف جو اب تک پورا نہ ہو سکا؟ سوشل میڈیا کے دلچسپ جوابات

پیر ہی کے روز کیے گئے ایک اور اعلان میں پی آئی اے کا کہنا تھا کہ کراچی سے ٹورنٹو کے لیے پرواز شروع کر دی گئی ہے۔ اس اقدام کے بعد اب کراچی کے بین الاقوامی ایئرپورٹ سے ٹورنٹو کے لیے براہ راست سفر کیا جا سکے گا۔

پاکستان ٹرائب کی خبریں/ویڈیوز/بلاگز حاصل کرنے کے لیے واٹس ایپ پر ہمارے ساتھ شامل ہوں

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

8 thoughts on “پی آئی اے کے مسافر کو ایک سگریٹ دس ہزار کا کیوں پڑا؟

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *