باتھ روم کے باہر بھی بائیو میٹرک مشینیں لگ گئیں

باتھ روم کے باہر بھی بائیو میٹرک مشینیں لگ گئیں

مبارک ہو! اب باتھ روم کے باہر بھی بائیو میٹرک مشینیں لگ گئیں۔

پاکستان میں جب سے تبدیلی آئ ہے، وقفے وقفے سے ہرکس و ناکس کی چیخیں نکلتی سنائ دے رہی ہیں۔ اور اب تو بات یہاں تک آ پہنچی ہے کہ باتھ روم کے باہر بھی بائیو میٹرک سسٹم لگا دیا گیا ہے۔ سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ اب غریب بے چارہ جاۓ تو کدھر جاۓ؟

وی آئ پی کلچر کو ختم کرنے کا نعرہ لگانے والی حکمران جماعت پی ٹی آئ نے اسلام آباد میں واقع وزارتِ صنعت کے دفتر میں بڑے گریڈ کے افسروں کے باتھ رومز میں بائیو میٹرک سسٹم انسٹال کر دیا ہے۔ اب یہ باتھ رومز محض بڑے گریڈ کے افسر استعمال کر سکیں گے اور کم گریڈ کا ملازم اس باتھ روم میں جانے کا محض خواب ہی دیکھ سکتا ہے۔ یہاں میں یہ پوچھنا چاہوں گی کہ کہیں خواب دیکھنے پر تو کوئ ٹیکس وغیرہ نہیں ہے ناں؟

اطلاعات کے مطابق یہ بائیو میٹرک سسٹم وزارتِ صنصت میں ملاقات کے لیۓ آنے والے افسران کی آسانی کے لیے لگایا گیا ہے۔

جبکہ دوسری طرف حقیقت کچھ اور ہی ہے۔ جہاں بڑے گریڈز کے افسران کو ہر میدان میں مراعتیں دی جا رہی ہیں وہیں کم گریڈز پر کام کرنے والے ملازمین کے باتھ روم صاف ہونا تو دُور اُس میں صابن تک دستیاب نہیں۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ وی آئ پی کلچر یوں ہی پروان چڑھتا رہے گا یا پھر غریب آدمی بھی سُکھ کا سانس لے سکے گا؟

ایمن سلیم

ایمن سلیم پاکستان ٹرائب کی ڈپٹی ایڈیٹر ہیں۔ زیر تحریر ناول کے ساتھ اردو ادب کا اچھا ذوق رکھنے والی ایمن بہت عمدہ ویژول آرٹسٹ بھی ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *