پی ٹی آئی حکومت کا نیا پاکستان ہاوسنگ منصوبہ حقیقت بننے کے مزید قریب

پی ٹی آئی حکومت کا نیا پاکستان ہاوسنگ منصوبہ حقیقت بننے کے مزید قریب

اسلام آباد: پاکستان میں تحریک انصاف حکومت کی جانب سے بے گھر افراد کو رعایتی نرخوں پر گھر بنا کر دینے کا منصوبہ حقیقت بننے کے سفر میں ایک قدم مزید آگے بڑھا ہے تاہم اس راستہ میں اب بھی کئی مراحل باقی ہیں۔

منگل کو وفاقی کابینہ کا اجلاس وزیراعظم عمران خان کی صدارت میں ہوا جس میں نیا پاکستان ہاؤسنگ اتھارٹی قائم کرنے سمیت ایک لاکھ 35 ہزار اپارٹمنٹس کی تعمیر کی منظوری بھی دی گئی۔

کابینہ اجلاس کے بعد میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ اسلام آباد میں وفاقی حکومت کے ملازمین کے لیے 25 ہزار اپارٹمنٹس بنائے جائیں گے۔

یہ بھی دیکھیں: عمران خان کے سٹیزن پورٹل پر شکایت درج کرانے والے کی جان کو خطرہ

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان رواں ماہ کی 17 تاریخ کو منصوبہ کا افتتاح کریں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ بلوچستان میں ایک لاکھ 10 ہزار گھر بنائے جائیں گے جس کے بعد گوادر کے ماہی گیر بھی گھروں کے مالک بن سکیں گے۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے بجلی اور گیس چوری میں ملوث بڑے ناموں کے خلاف کریک ڈاؤن کرنے کی بھی ہدایت کی ہے۔ ن لیگی رہنما روحیل اصغر کا ماہانہ گیس بل 12 ہزار روپے آتا تھا۔ یہ گیس بل ماہانہ ایک کروڑ روپے سے زائد ہے۔

سابق وزیر خارجہ حنا ربانی کھر کے متعلق گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وہ دو برسوں سے بجلی چوری کیس میں اسٹے آرڈر پر ہیں۔

مزید پڑھیں: پاکستان میں‌پارلیمانی کی جگہ صدارتی نظام رائج کرنے کی گونج

عمران خان نے حکومت میں آتے ہی اعلان کیا تھا کہ وہ آئندہ پانچ برسوں میں بے گھر افراد کے لیے 50 لاکھ گھر تعمیر کریں گے۔ اس مقصد کے لیے نیشنل ڈیٹا بیس اینڈ رجسٹریشن اتھارٹی (نادرا) کے ذریعے ملک بھر سے خواہشمند افراد کے فارم جمع کیے گئے تھے۔

حکومت کا کہنا تھا کہ مخصوص فیس کے ساتھ جمع کرائے گئے فارمز کا مقصد گھروں کی تعمیر کے منصوبہ کے لیے عوامی رجحان کا جائزہ لینا ہے۔

منگل کو کابینہ اجلاس میں نیا پاکستان ہاؤسنگ اتھارٹی بنانے کی منظوری دی گئی ہے جس کا دائرہ عمل پورے ملک میں ہو گا۔ تعمیرات سے متعلق ماہرین کا کہنا ہے کہ منصوبہ کے لیے وسائل کی فراہمی اور گھروں کی قیمتوں کا تعین اہم مراحل ہیں جس کے بعد اس کی کامیابی یا ناکامی کا تعین کیا جا سکے گا۔

یہ بھی پڑھیں: جعلی خبروں کی شناخت کیلیے علی بابا کی ڈیمو اکیڈمی نے مصنوعی ذہانت پر مبنی ٹول تیار کر لیا

پی ٹی آئی حکومت کے سیاسی مخالفین نیا پاکستان ہاؤسنگ منصوبہ کو وزیراعظم عمران خان کا عوامی حمایت حاصل کرنے کے لیے کیا گیا سیاسی اعلان قرار دیتے ہیں۔ جب کہ معیشت کی زبوں حالی کا حوالہ دیتے ہوئے بہت سے حلقے اسے ناقابل عمل منصوبہ بھی مانتے رہے ہیں۔

 

Nazesh Hassan

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *