پاکستانی معیشت میں‌تبدیلی: واجب الادا غیر ملکی قرض تاریخ کی بلند ترین سطح پر | pakistantribe.com/urdu/

پاکستانی معیشت میں‌تبدیلی: واجب الادا غیر ملکی قرض تاریخ کی بلند ترین سطح پر

اسلام آباد: تحریک انصاف حکومت کے تمام تر اعلانات اور قرض نہ لینے کے دعووں کے باوجود پاکستان کے ذمہ واجب الادا غیر ملکی قرضے 99 ارب 11 کروڑ ڈالڑ تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئے ہیں۔

پاکستان کے مرکزی بینک کے جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق ملک کے واجب الادا غیر ملکی قرضوں کا حجم 99 ارب 11 کروڑ ڈالر ہوگیا۔

تحریک انصاف کے عرصہ حکومت سے متعلق اعدادوشمار کے ذریعہ اسٹیٹ بینک کا کہنا ہے کہ رواں مالی سال کی دوسری سہ ماہی میں بیرونی قرضوں میں 2ارب 37کروڑ ڈالر کا اضافہ ہوا ہے۔

یہ بھی دیکھیں: خیبرپختونخوا میں خزانہ کی تلاش میں قدیم قبرستان کی بیحرمتی کرنے والے انجام کو پہنچ گئے

مقامی میڈیا رپورٹس میں مرکزی بینک کے اعدادوشمار کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ جون 2018ء میں پاکستان کے ذمہ بیرون قرضے 95 ارب 34 کروڑ ڈالر تھے جو اب بڑھ کر 99 ارب 11کروڑ ڈالر ہوگئے۔

ذرائع کے مطابق ان قرضوں کے حجم میں سعودی عرب سے ملنے والے 2 ارب ڈالر ہی شامل ہیں۔

متحدہ عرب امارات اور سعودی عرب سے ملنے والے مزید 1،1 ارب ڈالر ان قرضوں کے حجم میں شامل نہیں کیے گئے ہیں، انہیں بھی شمار کر لیا جائے تو بیرونی قرضے 101 ارب ڈالر کی سطح سے تجاوز کر چکے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں