ایون فیلڈ ریفرنس میں‌کب، کیا ہوا؟

ایون فیلڈ ریفرنس میں‌کب، کیا ہوا؟

اسلام آباد: شریف فیملی کے خلاف ایون فیلڈ ریفرنس کیس کا فیصلہ کچھ ہی دیر میں سنا دیا جائے گا۔ دی نیوز ٹرائب اردو سروس کی جانب سے معاملہ کی اہمیت کے پیش نظر ذیل میں جائزہ لیا گیا ہے کہ مقدمہ میں کب، کیا ہوا؟

نیب کورٹ نے9ماہ 20 روز سے زائد جاری رہنے والے ریفرنس پر80سے زائد سماعتیں کیں۔

سپریم کورٹ نے28جولائی 2017 کولندن فلیٹس ریفرنس دائر کرنے کا حکم دیا تھا۔

نیب نے8ستمبر2017کوعبوری ریفرنس دائر کیا۔

احتساب عدالت نے 13ستمبر2017کو ریفرنس پر پہلی سماعت کی۔

26ستمبر کو نوازشریف پہلی بار عدالت کے روبرو پیش ہوئے۔

عدم حاضری پر 26ستمبر کوحسن اور حسین نواز کے قابل ضمانت وارنٹ جاری ہوئے۔

26ستمبر کوکپیٹن (ر) صفدراورمریم نوازکے بھی قابل ضمانت وارنٹ جاری ہوئے۔

مریم نواز پہلی بار9اکتوبر کو نیب کورٹ میں پیش ہوئیں۔

کیپٹن(ر)صفدر کو ایئرپورٹ سے گرفتار کرکےعدالت میں پیش کیا گیا۔

50لاکھ روپے کے علیحدہ علیحدہ ضمانتی مچلکے جمع کرانے کے بعد ضمانت ہوئی۔

اسی روز حسن اور حسین نواز کا مقدمہ الگ کرکے انہیں اشتہاری قراردیا گیا۔

19اکتوبر کونوازشریف،مریم نوازاورکیپٹن(ر)صفدرپرفردجرم عائد کی گئی۔

6دسمبر سے7مئی تک18گواہوں کے بیان قلم بند اور جرح مکمل کی گئی۔

22جنوری2018کو ضمنی ریفرنس دائر کیا گیا۔

13مارچ کو ٹرائل مکمل کرنے کی6ماہ کی ڈیڈلائن ختم ہونے مزید3ماہ ملے۔

9مئی کو دوبارہ ٹرائل کرنے کی مہلت میں ایک ماہ کا اضافہ کیا گیا۔

24مئی کو نوازشریف نے 4سماعتوں میں128سوالات کا جواب دیا۔

25سے28مئی تک مریم نواز،29اور30مئی کو کیپٹن(ر)صفد نےبیان مکمل کرایا۔

11جون کوحتمی دلائل سے ایک دن پہلےخواجہ حارث کیس سے الگ ہوگئے۔

19جون کو خواجہ حارث نیب عدالت پہنچے اور دستبرداری کی درخواست واپس لی۔

27جون کو7سماعتوں کے بعد وکیل صفائی نے حتمی دلائل مکمل کیے۔

28جون سے 3جولائی تک مریم نواز کے وکیل امجدپرویز نےحتمی دلائل دیئے۔

9مہینے اور20دن سماعت کے بعد فیصلہ محفوظ کیا گیا۔

5 جولائی کو شریف فیملی کے وکلاء نے فیصلہ کو سات روز کے لیے ملتوی کرنے کی درخواست دائر کی تاہم عدالت نے اسے مسترد کر دیا۔

 

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *