پائنیر فیسٹیویل حملہ، پنجاب یونیورسٹی نے 35 طلبہ معطل کر دیے

پائنیر فیسٹیویل حملہ، پنجاب یونیورسٹی نے 35 طلبہ معطل کر دیے

لاہور: پنجاب یونیورسٹی میں گزشتہ روز پائینیر فیسٹیویل نامی تقریب کی تیاریوں پر قوم پرست طلبہ تنظیم کی جانب سے حملے اور بعد میں ہوئے ہنگاموں میں ملوث ہونے پر 35 طلبہ معطل کر دیے گئے۔

پنجاب یونیورسٹی کے رجسٹرار ڈاکٹر خالد خان کی ہدایت پر معطل کئے گئے طلبہ کا تعلق اسلامی جمعیت طلبہ اور پشتون اسٹوڈنٹس کونسل سے بتایا گیا ہے۔

یونیورسٹی انتظامیہ کی جانب سے جاری کردہ تفصیل میں کہا گیا ہے کہ معطلی کے نوٹیفکیشنز 15 مختلف شعبہ جات کے سربراہوں نے جاری کیے۔

معطل ہونے والے طلبا میں جینڈر اسٹڈیز کے عالمگیر خان، حیات اللہ اور معظم علی شاہ ، ماس کیمونیکیشن کے اسفند یار خان، عبد السلام اور اسامہ اعجاز وٹو ، پی یو سی آئی ٹی کے اشرف خان، شعبہ سیاسیات کے دولت خان، کیمیکل انجینئرنگ کے ریحان خان، فزکس کے عجب خان، سوشیالوجی کے عارف خان اور سلمان وزیر، یائیدین خان،آئی ای آر کے داؤد خان اور احمد خان ، اسلامک سنٹر کے عبد اللہ شامل ہیں۔

خرم شہزاد، ہدایت اللہ، راحت علی، انیب، تنزیل الرحمن، اسامہ شفاعت، منیب افضل، بلال احمد، شفیع مینگل، وارث خان، مقبول لہری، مزمل خان، ذیشان، شاہد، جواد احمد، سکندر کاکٹر، ربیع الرحمن، تنزیل الرحمن کو بھی معطل کیا گیا۔

یونیورسٹی نے طلباء کو پندرہ روز کیلئے معطل کر کے ذاتی شنوائی کے لیے طلب کر لیا ہے۔ معطل ہونے والے طلباء کا یونیورسٹی سے اخراج بھی کیا جاسکتا ہے۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *