ٹرمپ ایران پر نئی پابندیاں عائد کرسکتے ہیں،امریکی وزیر کا اعتراف

ٹرمپ ایران پر نئی پابندیاں عائد کرسکتے ہیں،امریکی وزیر کا اعتراف

نیویارک: امریکی وزیر خزانہ اسٹیون منوچین نے کہا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ ایران پر نئی پابندیاں عائد کر سکتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا ٹرمپ جلد اس بات کا فیصلہ کرلیں گے کہ اوباما کی جانب سے ایران پر عئد پابندیوں میں نرمی کو جاری رکھیں یا نہیں۔

مقامی میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں کہا کہ ہوسکتا ہے ٹرمپ ایران پر مزید پابندیاں عائد کردیں کیونکہ اس وقت دونوں ممالک کے تعلقات سخت کشیدہ ہیں۔

ایران اور عالمی طاقتوں میں ہونے والے ایٹمی معاہدے کے بعد امریکا نے تہران پر عائد پابندیوں میں نرمی کردی تھی اور دونوں ممالک کے تعلقات میں بہتری بھی آئی تھی، تاہم اس وقت ایک بار پھر واشنگٹن اور تہران کے مابین تعلقات سخت کشیدگی کا شکار ہیں۔

اسٹیون منوچین نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے یہ بھی کہا کہ مجھے توقع ہے کہ ایران پر پابندیاں عائد کی جائیں گی اور ماضی کی رپورٹس کے مطابق ان پابندیوں کا ہدف ایران کی مختلف شخصیات اور کاروبار ہوں گے۔

برسلز میں ایران اور یورپی اتحادیوں سے مذاکرات کے بعد انہوں نے بتایا کہ 2015 میں کیا گیا جوہری معاہدہ تہران کو ایٹمی طاقت بننے سے روکنے کے لیے ایک اہم قدم تھا جو کامیاب رہا۔

امریکی وزیر خزانہ نے یہ بھی کہا کہ موجودہ صورتحال میں امریکی صدر ماضی میں کیے گئے اقدامات کو نظر انداز کر سکتے ہیں۔

اپنی انتہاپسندانہ پالیسیوں کی وجہ سے متنازعہ ہو جانے والی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ 2015 میں ایران اور عالمی طاقتوں کے مابین ہونے والے جوہری معاہدے میں ترمیم یا اسے ختم کردینا چاہتے ہیں۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *