گلوبل وارمنگ دنیا سے چاکلیٹ ختم کر دے گی؟

گلوبل وارمنگ دنیا سے چاکلیٹ ختم کر دے گی؟

نیویارک: سوشل میڈیا پر چاکلیٹ کے خاتمے سے متعلق پھیلنے والی خبر نے چاکلیٹ کے دیوانوں کی نیندیں اڑا دی تھیں لیکن پریشانی کی کوئی بات نہیں،چاکلیٹ کے مکمل خاتمے کے امکانات نہ ہونے کے برابر ہیں۔

ایک خبر میں کہا گیا تھا کہ ماحولیاتی تبدیلیوں کے باعث 2050 میں چاکلیٹ سے محرومی کا سامنا بھی کرنا پڑ سکتا ہے، کیونکہ کرہ ارض کا درجہ حرارت بڑھنے کے باعث زمین گرم ہورہی ہے جس میں کوکو کی فصل نہیں ہو سکتی۔

یہ خبر بہت تیزی کے ساتھ سوشل میڈیا پر پھیلی جس کےبعد چاکلیٹ کے دیوانوں میں خوف کی ایسی لہر پیدا ہوئی کے انہوں نے کرہ ارض کو بچانے کے لیے مہم شروع کردی. لوگوں نے مگز اور ٹی شرٹس پر زمین کو بچائو کے سلوگن آویزاں کر لیے۔

یہ بات آگے بڑھتی لیکن محقیقین نے فورا ہی وضاحت کر دی کہ ایسی کوئی بات نہیں، زمین پر کوکو کی فصل کو کوئی خطرہ نہیں۔

خبربرطانیہ کے ایک میگزین میں شائع آرٹیکل کے بعد سامنے آئی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ بڑھتے ہوئے درجہ حرارت اور خشک موسم کے باعث کوکو کی فصل 2050 تک ختم ہوجائے گی۔

برطانوی میگزین میں 2014 میں کی گئی ایک تحقیق کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ کوکو کی فصل کو گلوبل وارمنگ کے باعث خطرہ لاحق ہے ،تحقیق کے مطابق اگر کرہ ارض کا درجہ حرارت 2050تک 2 سیلسیس سے زیادہ ہوتا ہے تو یہ کوکو کی فصل کے لیے قابل برداشت نہیں ہوگا۔

جرمن میڈیا کے مطابق اس بارے میں یونی ورسٹی آف کیلیفورنیا کے سائنسدان یو سی برکلے نے کہا کہ ابھی کوکو کی فصل کو کوئی خطرہ نہیں تاہم پھر بھی اس کے تحفظ کے لیے ہمیں اقدامات کرنے ہوں گے۔

گلوبل وارمنگ یا موسمیاتی تبدیلیوں کے نتیجے میں چاکلیٹ ختم ہونے کا خدشہ گزشتہ سالوں میں کئی بار ظاہر کیا جا چکا ہے۔ 2015 میں اقوام متحدہ کی ایک کانفرنس میں بھی یہ امکان ظاہر کیا گیا تھا کہ موسمیاتی تبدیلیاں زرعی فصلوں پر اثرانداز ہو سکتی ہیں۔

2011 کے دوران سائنٹیفک امیرکن نامی ویب سائٹ کی شائع شدہ تحقیق میں بھی یہ اعلان کیا گیا تھا کہ موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے 2030 تک کوکو یا کوکوا کی فصل کم ہو سکتی ہے۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

One thought on “گلوبل وارمنگ دنیا سے چاکلیٹ ختم کر دے گی؟

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *