حقانی نیٹ ورک نے میری بیٹی کو قتل جبکہ بیوی کے ساتھ جنسی زیادتی کی، جوشوا بوئل \ pakistantribe.com/urdu

حقانی نیٹ ورک نے میری بیٹی کو قتل جبکہ بیوی کے ساتھ جنسی زیادتی کی، جوشوا بوئل

ٹورنٹو : حقانی نیٹ ورک کی قید سے بازیاب کرایا جانے والا جوڑا کینیڈا پہنچ گیا ہے، جوشوا بوئل کا کہنا ہے کہ دورانِ قید حقانی نیٹ ورک کے لوگوں نے ان کی ایک شیر خوار بیٹی کو قتل کیا جبکہ اس کی بیوی کے ساتھ جنسی زیادتی بھی کی گئی۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام ورلڈ ڈیسک کے مطابق جمعہ اور ہفتہ کی درمیانی شب جوشوا بوائل اور اس کی اہلیہ کیٹلن اپنے تین بچوں کے ہمراہ کینیڈا کے دارالحکومت ٹورنٹو پہنچے جہاں پیرسن انٹرنیشنل ایئر پورٹ کے لاﺅنج میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جوشوا بوئل نے کہا کہ حقانی نیٹ ورک نے اسے اور اس کی حاملہ بیوی کو طالبان کے زیر تسلط علاقوں سے اس وقت اغوا کیا جب وہ مقامی لوگوں کیلئے امدادی کام کر رہے تھے ۔

ان کا کہناتھا کہ وہ لوگ بہت ظالم تھے جنہوں نے میری شیر خوار بیٹی مارٹائر بوئل کو قتل کردیا جبکہ میری بیوی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بھی بنایا‘۔

جوشوا بوئل نے کہا کہ حقانی نیٹ ورک کی طرف سے مجرمانہ سرگرمیوں میں شرکت کی دعوت سے انکار کرنے پر انہوں نے اس کی بیوی کے ساتھ جنسی زیادتی کی، زیادتی صرف ایک شخص نے نہیں کی بلکہ کمانڈر نے تمام گارڈز کے ساتھ مل کر میری بیوی کی عصمت دری کی۔

یاد رہے کہ جوشوا بوئل اور ان کی اہلیہ کیٹلن کولمن کو 2012 میں افغانستان سے اس وقت اغوا کیا گیا تھا جب وہ ہائکنگ کر رہے تھے۔

پانچ سال بعد پاکستان اور امریکہ کی سکیورٹی فورسز کے مابین انٹیلی جنس شیئرنگ کی بنیاد پر پاک فوج نے کرم ایجنسی میں آپریشن کرکے دونوں کو بدھ کے روز بازیاب کرایا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں