بناسپتی گھی پر 2020 تک مکمل پابندی کا فیصلہ

بناسپتی گھی پر 2020 تک مکمل پابندی کا فیصلہ

لاہور: پاکستانی صوبہ پنجاب میں کھانے پینے کی اشیاء کے معیار کے ذمہ دار ادارے پنجاب فوڈ اتھارٹی (پی ایف اے) نے فیصلہ کیا ہے کہ مصنوعی گھی یعنی وناسپتی/بناسپتی گھی پر 2020 تک مکمل پابندی عائد کر دی جائے گی۔

پاکستان ٹرائب اردو سروس کے مطابق بناسپتی گھی پر مکمل پابندی کا فیصلہ پی ایف اے کی سائنٹیفک کمیٹی کی میٹنگ کے بعد سامنے آیا ہے۔

ماہرین کے مطابق بناسپتی گھی کی تیاری کے دوران استعمال کئے جانے والے اجزاء نکل اور چربی وغیرہ موٹاپے کے علاوہ کینسر، امراض قلب، شوگر اور ذہنی بیماریوں کی وجہ بن رہے ہیں۔

پنجاب فوڈ اتھارٹی کے ڈائریکٹر جنرل نورالامین کے مطابق ایک عام پاکستانی سالانہ اوسطا 18 کلو گھی استعمال کرتا ہے جب کہ یورپی شہری اس عرصے میں پاکستانیوں کے کل استعمال کا محض تین فیصد بناسپتی گھی استعمال کرتا ہے۔

اس فیصلے پر عملدرآمد کے حوالے سے تاحال تفصیلات سامنے آنی باقی ہیں تاہم ملک میں وسیع پیمانے پر استعمال ہونے والے مصنوعی گھی کے نقصانات کو نظر انداز نہیں کیا جاسکتا۔

امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کہ پنجاب فوڈ اتھارٹی کے اس احسن فیصلے کے بعد مرکز کے علاوہ باقی صوبے بھی پاکستانیوں کی صحت کو لاحق اس بھیانک خطرے کا سدباب کرنے کی کوششیں کریں گے۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *