وہ جانور جو روزانہ 4 کروڑ جانداروں کو اپنی خوراک کے طور پر کھا جاتا ہے

وہ جانور جو روزانہ 4 کروڑ جانداروں کو اپنی خوراک کے طور پر کھا جاتا ہے

کیپ ٹاون: عام زندگی میں جن لوگوں کی خوراک زیادہ ہوتی ہے، ان کا مذاق اڑتبے ہوئے انھیں پیٹو کہا جاتا ہے، کئی لوگ تو کھانے دیکھتے ہی اْس پر ٹوٹ پڑتے ہیں لیکن کیا آپ نے کبھی سوچا ہے کہ دنیا میں سب سے زیادہ غذا کھانے والا جاندار کون سا ہے؟ جی ہاں وہ ہے ‘بلیو وہیل۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام کے مطابق جانداروں میں سب سے زیادہ خوراک بلیو وہیل کی ہوتی ہے، اس کی یومیہ خوارک تقریباً چار ٹن ہے۔

وہیل کی یہ نسل روزانہ کرل نامی چار کروڑ سمندری حیاتیات کو اپنی غذا بناتا ہے اتنی غذا کسی اور جاندار کی نہیں ہوتی ہے لیکن صرف وہیل ہی نہیں جو زیادہ خوراک کھاتی ہے بلکہ افریقی نسل کے ہاتھیوں کی خوراک بھی بہت زیادہ ہوتی ہے۔

جنوبی افریقہ میں ہاتھیوں کے ماہر نارمن اوین سمتھ نے کہاکہ افریقی ہاتھی روزانہ اپنے وزن سے بھی زیادہ غذا کھاتے ہیں۔ ایک افریقی ہاتھی کا اوسطاً وزن چھ ہزار کلوگرام ہوتا ہے۔

وہ روزانہ تقریباً 60 کلو گرام خشک چارہ کھاتے ہیں جبکہ دودھ دینے والی مادہ ہاتھی روزانہ اپنے وزن کا تقریبا ڈیڑھ فیصد چارہ کھاتی ہے اور اگر اس چارے میں پانی کی مقدار بھی شامل کر لیں تو افریقی ہاتھی روزانہ تقریبا ڈھائی سو کلو چارہ کھاتے ہیں۔

ہاتھی روزانہ تقریبا 18 گھنٹے کھانے اور اپنے چارے کی تلاش میں صرف کرتے ہیں، اسی طرح چینی نسل کا بڑا پانڈا بھی ہر روز تقریباً 14 گھنٹے کھانے اور پینے میں صرف کرتا ہے۔

پانڈا تقریباً ساڑھے بارہ کلو بانس کا چارہ استعمال کرتا ہے تب جا کر اس کی روزمرہ کی غذائی ضرورت پوری ہوتی ہے۔سبزی خور جانوروں کے مقابلے میں گوشت خور جانوروں کو کم کھانے کی ضرورت ہوتی ہے۔

کچھ لوگ یہ دعوی کرتے ہیں کہ امریکہ میں پایا جانے والا بھورا چمگادڑ ایک گھنٹے میں ایک ہزار مچھر گپ کر جاتا ہے اگرچہ اس دعوے پر سائنسدانوں یقین نہیں ہے لیکن پھر بھی چمگادڑ کی اچھی خاصی غذا ہوتی ہے۔

اسیطرح گھروں میں پائے جانے والی چھچھوندر کو بھی بہت غذا درکار ہوتی ہے انھیں ہر دو گھنٹے میں بھوک لگتی ہے اور اس وقفے میں اسے کھانے کے لیے کچھ نہ کچھ ضرور ملنا چاہیے, چھچھوندر کو روزانہ اپنے وزن کے 80 سے 90 فیصد کی غذا چاہیے ہوتی ہے۔

یاد رہے کہ آج کل بلیو وہیل نامی ایک خطرناک گیم بھی نوجوانوں میں بہت مقبول ہے جو روزانہ کسی نہ کسی نوجوان کو کھا جاتی ہے۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *