ایگزیکٹ جعلی ڈگری کیس، سالانہ 1 ارب ڈالر کمانے کا انکشاف

ایگزیکٹ جعلی ڈگری کیس، سالانہ 1 ارب ڈالر کمانے کا انکشاف

 ٹورانٹو : کینیڈین میڈیا نے ایف بی آئی کے سابق عہدیدار کے حوالے سےانکشاف کیا ہے کہ جعلی ڈگریاں بیچنے میں بدنام ایگزیکٹ گھناؤنے کاروبار سے سالانہ ایک ارب ڈالر کماتی تھی۔

کینڈیین میڈیا کے مطابق ایف بی آر کے سابق عہدیدار نے انکشاف کیا کہ ایگزیکٹ کے 19 ممالک کے 35 بنکوں میں اکاؤنٹس تھے۔

رپورٹ کے مطابق  کینیڈامیں وزیر، سیاستدانوں اورڈاکٹروں سمیت 800 شہریوں کی ڈگریاں بھی جعلی ہیں اور کئی ایگزیکٹ کی ایک ہی یونیورسٹی کاشکارہوئے۔

رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ ایگزیکٹ کی 100 کے قریب جعلی یونیورسٹیاں تھیں جنہیں ڈگریاں لینے کے خواہش مند افراد کو پھانسنے کے لیے استعمال کیا جاتا تھا۔

یاد رہے کہ گزشتہ دنوں امریکا میں ایگزیکٹ کے ایک اہلکار کو 22 ماہ قید اور بھاری جرمانے کی سزا سنائی گئی ہے۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *