گوگل کروم شور پیدا کرنے والی ویب سائٹس کو مستقل خاموش کر دے گا

گوگل کروم شور پیدا کرنے والی ویب سائٹس کو مستقل خاموش کر دے گا

اسلام آباد: انٹرنیٹ استعمال کرنے والے صارف کے طور پر کوئی بھی یہ بات پسند نہیں کرتا کہ ویب سائٹس وزٹ کرتے ہوئے کہیں خودکار ویڈو یا آڈیو چل پڑے اور شورشرابے کے نتیجے میں ماحول کو متاثر کرے۔ اس یکسوئی کے باوجود اب تک انٹرنیٹ صارفین کو آڈیو یا ویڈیو آٹو پلے کرنے والی سائٹس کا کوئی حل نہیں ملا تھا۔

پاکستان ٹرائب ٹیکنالوجی ڈیسک کو دستیاب معلومات کے مطابق انٹرنیٹ صارفین کا یہ تکلیف دہ مسئلہ اب انہیں مزید متاثر نہیں کر سکے گا۔

گوگل کے ملکیتی براؤزر کروم کی دیکھ بھال کرنے والی ٹیم نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ خودکار طریقے سے ویڈیوز یا وائس پلے کرنے والی ویب سائٹس کی آوازوں کو بند کرنے کے لئے صارفین کو یہ سہولت مہیا کریں گے۔

گوگل کروم پر شور پیدا کرنے والی ویب سائٹس سے چھٹکارا
گوگل کروم پر صارفین سائلنس موڈ کے اس نئے فیچر کو استعمال کر سکیں گے جس کی آزمائش شروع کی جا چکی ہے۔ نیا فیچر صارفین کو اجازت دے گا کہ وہ کروم کے ذریعے ویب سائٹس کو وزٹ کرتے وقت صرف ایک بار ساؤنڈ کو خاموش کریں اور پھر خاموشی کے ساتھ انٹرنیٹ براؤز کرتے رہیں۔

دو برس قبل گوگل کروم نے ہی ایک آپشن متعارف کروایا تھا جس کے نتیجے میں صارفین غلط سائٹس کو فلیگ کر سکتے تھے۔

گوگل کروم پر شور پیدا کرنے والی ویب سائٹس سے چھٹکارے کا فیچر متعارف کروانے والی ٹیم کے ایک ڈویلپر کا کہنا ہے کہ کروم کے نئے کنرے ورژن میں نیا فیچر ابھی بیٹا اسٹیج پر ہے۔

گوگل کروم پر شور پیدا کرنے والی ویب سائٹس کے نئے فیچر کو کیسے استعمال کریں؟
گوگل کروم کا نیا فیچر استعمال کرنا بہت ہی آسان ہے بس آپ کے پاس کروم کا نیا Canary ورژن ہونا چاہئے۔ ذیل میں ہم وہ طریقہ دے رہے ہیں جس کے تحت آپ نئے فیچر کو فعال کر سکتے ہیں:

  • ویب سائٹ ایڈریس کے بائیں جانب موجود سیکیورٹی اسٹیٹس ٹیب پر جائیں۔
  • یہاں آپ دیگر اجازتوں اور تفصیلات کا ساتھ میوٹ کا آپشن دیکھ سکیں گے۔
  • اسے فعال کر دیں اور آپ کا مسئلہ حل ہو گیا۔ یہ سائٹ دوبارہ سیٹنگ تبدیل کرنے تک اب خاموش رہا کرے گی۔

پاکستان ٹرائب ٹیکنالوجی ڈیسک کے مطابق فی الوقت گوگل کروم اکلوتا انٹرنیٹ براؤزر ہے جو یہ فیچر صارفین کو مہیا کر رہا ہے تاہم توقع ہے کہ جلد دیگر براؤزرز بھی اسے استعمال کے لئے پیش کر رہے ہوں گے۔

انٹرنیٹ ماہرین کے مطابق توقع ہے کہ اس آپشن کے نتیجے میں ویب سائٹس آٹو پلے ہونے والی ویڈیوز کو اس خوف کے مارے بلاک کر دیں گی کہ کہیں وہ صارفین کی جانب سے مستقل طور پر بلاک نہ کر دی جائیں۔

گوگل کروم کے نئے فیچر کی موجودگی میں توقع ہے کہ کسی بھی سائٹ پر جانے کے بعد وہاں لگائی گئی لائیو اسٹریم یا اشتہارات سمیت دیگر آوازی خودکار طریقے سے نہیں چلا کریں گی۔

اب ہم کہہ سکتے ہیں کہ انٹرنیٹ براؤزنگ کے دوران اچانک پیدا ہونے والی آوازوں کا سراغ لگانے کے لئے صارف اپنے براؤزر کے ہر ٹیب پر جا کر یہ دیکھنے سے بچ جائے گا کہ کس سائٹ سے شور پیدا ہورہا ہے۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *