ایگزیکٹ جعلی ڈگری کیس، امریکی عدالت نے عمیر حامد کو 21 ماہ کی سزا سنا دی

ایگزیکٹ جعلی ڈگری کیس، امریکی عدالت نے عمیر حامد کو 21 ماہ کی سزا سنا دی

نیویارک : امریکااور دیگر ملکوں میں جعلی ڈگریوں کے کاروبار کے حوالے سے پاکستان کو بدنامی دلانے والےمقدمے کا فیصلہ سنادیا گیا۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام کے مطابق امریکی وفاقی جج نے ملزم عمیر حامد کو 21؍ ماہ کی سزا اور 100؍ ڈالر جرمانہ کا فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ ملزم عمیر حامد نے اپنے جرم کا اعتراف بھی کرلیا ہے اور یہ ایگزیکٹ کی فراڈ اسکیم کا آرکیٹکٹ نہیں بلکہ 126؍ ڈالرز ماہانہ کی تنخواہ کا ملازم تھا اور اس نے اپنے فعل پر ندامت کا اظہار بھی کیا ہے لہٰذا اسے 21؍ ماہ کی سزا دی جاتی ہے اور اس کے بعد اسے ڈیپورٹ کیا جائے۔

خاتون جج رونی ابرامز نے 5.3 ملین امریکی ڈالرز (55کروڑ 65 لاکھ روپے)کی وہ رقم بھی ضبط کرنے کا حکم دیا جو ایگزیکٹ نے جعلی ڈگریوں کے کاروبار سے کما کر امریکی بینک اکائونٹس میں رکھی ہوئی تھی۔

وفاقی جج نے سزا سنانے سے قبل پراسیکیوشن اور ملزم کے وکیل کے موقف کو بھی سنا، جج نے ملزم عمیر حامد سے بھی دریافت کیا کہ اس جرم کا اعتراف بھی کرچکاہے اب وہ کچھ کہنا چاہتاہے جس پر عمیر حامد نے عدالت کو بتایا کہ وہ اپنے جرم پر شرمندہ ہے اور اس نے زندگی میں کئی بڑے سبق سیکھ لئے ہیں۔
وفاقی جج نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ عمیر حامد اس فراڈ اسکیم کا آرکیٹکٹ نہیں ہے بلکہ ایگزیکٹ ادارے کا ایک ملازم تھا لیکن 126؍ ڈالرز ماہانہ تنخواہ سے 3؍ ہزار ڈالرز ماہانہ تنخواہ کے فرق کو اسے محسوس کرنا چاہئے تھا۔

جج نے یہ ریماکس دیے کہ ایگزیکٹ نے اپنی وابستگی کے دوران اسے اس ساری اسکیم کا پتہ چل گیا ہوگا اس کو سوچنا چاہئے تھا کہ ایگزیکٹ اس پر اتنا مہربان کیوں ہے؟ عمیر حامد اپنے کئے پر احساس ندامت بیان کرتے ہوئے زارو قطار رونے لگا جبکہ کمرہ عدالت میں بیٹھی ایک نوجوان پاکستانی خاتون بھی زار و قطار روتی رہی۔

ملزم کے وکیل نے سزا سے قبل عدالت کو یہ بھی بتایا کہ عمیر حامد اپنی بیوی اور ایک بچے اور اپنے والدین کا واحد کفیل ہے وہ ایگزیکٹ میں روزگار کے لئے ملازم تھا لہٰذا وہ فراڈ کاماسٹر مائنڈ نہیں ہے امریکی محکمہ انصاف اس عدالتی فیصلے کے بارےمیں ایک پریس ریلیزبھی جاری کرے گا۔

جج نے سزا سناتےہوئے 21؍ ماہ قید کے ساتھ یہ واضح نہیں کیا کہ اپنی گرفتاری سے لیکر اب تک عمیر حامد نے جیل میں جو وقت گزارا ہے وہ اس سزا میں سے منہا کیا جائےگا یا نہیں لیکن عدالت کی برخاستی کے بعد وکلا کا کہنا تھا کہ سزا کے اعلان سےآئندہ 21؍ ماہ تک عمیر حامد کوسزا بھگتنا ہوگی۔

 

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *