” جامعہ کراچی میں اب فیل امیدوار کو بھی داخلہ مل سکتا ہے “

” جامعہ کراچی میں اب فیل امیدوار کو بھی داخلہ مل سکتا ہے “

کراچی: پاکستان کی دوسری بڑی سرکاری جامعہ کراچی یونیورسٹی میں انتظامیہ نے میرٹ کی دھجیاں بکھیرتے ہوئے پہلی بار تھرڈ ڈویژن کے حامل امیدواروں کو بھی داخلے دے دیے گئے۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام کے مطابق ملک کے بڑے اردو روزنامے نے اپنی رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ کراچی یونیورسٹی کی انتظامیہ نے تھرڈ ڈویژن کے داخلوں کی راہ ہموار کر دی ہے اور تاریخ میں پہلی بار تیسرے درجے کے نمبر لینے والے امیدواروں کو بھی داخلے دیے گئے۔

روزنامے کی رپورٹ کے مطابق مجموعی طور پر ایوننگ پروگرام میں تھرڈ ڈویژن والے چار طلباء کو داخلے دیے گئےہیں۔

جن میں جرمیات کے شعبے میں واجد عباس داخلہ دیا گیا اور ان کی پرسنٹیج 44.87فیصد تھی۔

ایم رحمٰن کو معاشیات میں داخلہ دیا گیا ان کی اوسط 44.64فیصد تھی جب کہ 44.91فیصد حاصل کرنے والی روبینہ بی بی کو ڈی ایچ آر میں داخلہ دیا گیا۔

اسی طرح لورین نولز کو بھی ڈی ایچ آر میں داخلہ دیا گیا اور ان کی اوسط 44.87فیصد تھی۔ واضح رہے کہ جامعہ کراچی کے اکیڈمک کونسل اور سینڈیکیٹ سے یہ طے کرا رکھا ہے کہ معیار تعلیم پر کبھی سمجھوتہ نہیں ہوگا اور 45فیصد سے کم یعنی تھرڈ ڈویژن کو جامعہ کراچی میں داخلہ نہیں دیا جائے گا۔

اس ضمن میں جامعہ کے ایک اسسٹنٹ پروفیسر نے روزنامے کو بتایا کہ کراچی یونیورسٹی بدترین مالی بحران سے دوچار ہے اور اب خسارہ دور کرنے کے لیے تھرڈ ڈویژن تو کیا فیل اُمیدواروں کو بھی داخلہ دے سکتا ہے۔

دوسری جانب ڈائریکٹر ایوننگ پروگرام ڈاکٹر عابد حسین نے تھرڈ ڈویژن کے امیدواروں کے داخلوں کا امکان مسترد کرتے ہوئے کہا کہ اگر ایسا ہوا ہے سخت کارروائی کی جائے گی اور داخلے منسوخ کردیے جائیں گے۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *