مکی آرتھر نے عمراکمل کے الزامات مسترد کردیے

مکی آرتھر نے عمراکمل کے الزامات مسترد کردیے

لاہور: ہاکستان کرکٹ ٹیم کے ہیڈکوچ مکی آرتھر نے عمراکمل کے الزامات مسترد کرتے ہوئے کہاہے کہ میں نے نوجوان کھلاڑی کو گالیاں نہیں دیں۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام کے مطابق عمراکمل کے الزامات پر اپنے ردعمل میں مکی آرتھر کا کہنا تھا کہ عمر اکمل جھوٹ بول رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ نوجوان بلے باز کی فٹنس اور پرفارمنس بہتر نہیں تھی اس لیے ان سے کہا تھا کہ خود میں بہتری لاؤ۔

ہیڈکوچ نے مزید کہا کہ عمراکمل ٹیم کا حصہ نہیں اور وہ ٹیم کا کوچنگ اسٹاف استعمال کرنا چاہتے تھے جس کی اجازت انہیں نہیں دی گئی۔

یاد رہے کہ اس سے قبل میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمرا اکمل نے دعویٰ کیا تھا کہ ٹیم کے ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے انہیں مغلظات بکیں۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام کے مطابق عمرا کمل کا کہنا تھا کہ ہیڈ کوچ نے چیف سلیکٹر انضمام الحق کے سامنے انہیں گالیاں دیں اور اکیڈمی نہ آنے کا کہا۔

انہوں نے کہا کہ جب مکی آرتھر گالیاں دے رہے تھے تو کسی بھی سینیئر کھلاڑی نے انہیں روکنے کی کوشش نہیں کی، ہیڈکوچ نے مجھے کہا کہ تم اکیڈمی مت آیا کرو اور کلب کرکٹ کھیلو۔

عمرا اکمل کا کہنا تھا کہ مجھے چیمپئنز ٹرافی سے ڈارپ کیے جانے پر اتنا دکھ نہیں ہوا جتنا کل کوچنگ اسٹاف کے رویے سے ہوا۔ کوچنگ اسٹاف کے رویے سے متعلق پاکستان کرکٹ بورڈ کو بتانا چاہتا ہوں، چیئرمین پی سی بی سےدرخواست کروں گا کہ وہ ہیڈکوچ کی گالیوں کا نوٹس لیں،۔

انہوں نے کہا کہ میں ایک کرکٹر ہوں اور میری ذاتی زندگی پر بات کرنے کے بجائے مجھ سے کرکٹ کے حوالے سے بات کی جائے۔

عمرا اکمل کا یہ بھی کہنا تھا کہ مجھے ناجائز وارننگ کے سبب چیمپئنز ٹرافی سے ڈراپ کیا گیا۔ مجھے اکیڈمی نہیں آنے دیا جارہا اور کہا جاتا ہےکہ کلب کرکٹ کھیلو، میں کلب کرکٹ کھیلتا ہوں، اپنے کلب سے ہی میں نے شہرت حاصل کی۔ کرکت میرا شوق اور میرا جذبہ ہے مجھے اس سے دور نہیں کیا جاسکتا۔

انہوں نے مزید کہا مکی آرتھر دیگر کھلاڑیوں کے ساتھ بھی رویہ برا رکھتے ہیں اور انہیں بھی گالیاں دیتے ہیں۔

یاد رہے کہ یہ پہلا موقع نہیں کہ عمرا اکمل کے سبب پاکستان ٹیم میں کوئی تنازع کھڑا ہوا ہو، ماضی بھی ان کے سابق ہیڈکوچ وقاریونس اور کئی کھلاڑیوں سے اختلافات کے معاملات سمیت ماڈلز سے بدتمیزی ڈانس پارٹیوں کے اسکینڈل سامنے آتے رہے ہیں۔

۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *