نیوزی لینڈ نے اپنے کھلاڑیوں کو ورلڈ الیون میں شامل ہونے سے روک دیا

نیوزی لینڈ نے اپنے کھلاڑیوں کو ورلڈ الیون میں شامل ہونے سے روک دیا

ویلنگٹن:نیوزی لینڈ کرکٹ بورڈ نے اپنے کنٹریکٹ یافتہ کھلاڑیوں کو   پاکستان کا مجوزہ دورہ کرنے والی ورلڈ الیون کی ٹیم میں شامل ہونے سے روک دیا جب کہ سابق کھلاڑیوں کو بھی محتاط ہونے کی ہدایت  کی ہے۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام کے مطابق نیوزی لینڈ بورڈ کے چیف ایگزیکٹو ڈیوڈ وائٹ نے واضح کیا ہے کہ ان کا کوئی بھی زیر معاہدہ کھلاڑی ورلڈ الیون  میں شامل نہیں ہوگا۔

اس وقت نیوزی لینڈ کے 21 موجودہ کھلاڑی بورڈ کے ساتھ معاہدہ کرچکے لیں جن میں مارٹن گپٹل میں شامل ہیں۔

 اپنے کنٹریکٹ یافتہ کھلاڑیوں کو پاکستان کا سفر کرنے سے روک دیا جبکہ سابق پلیئرز کو بھی دیکھ بھال کر فیصلہ کرنے کی ہدایت کردی گئی ہے۔
جب  ڈیوڈ وائٹ سے جب پوچھا گیا کہ موجودہ کھلاڑیوں  پر ایونٹ میں شرکت سے پابندی اور سابقہ کھلاڑیوں کو دیکھ بال  کے فیصلے کی ہدایت کا مقصد انہیں ایک لاکھ ڈالر کی پرکشش پیشکش سے باز رکھنا تو نہیں ؟ جس پر انہوں نے جواب دیا کہا کہ ہم واضح اعلان  ابھی نہیں کرسکتے ، اس حوالے سے ہماری انٹرنیشنل کمٹمنٹ ہوگی اور  ممکنہ طور پر کھلاڑیو ورلڈ الیون کے دورے میں شامل ہوسکتے ہیں۔

دوسری جانب نیوزی لینڈ پلیئرز ایسوسی ایشن کے سربراہ ہیتھ ملز نے کہاکہ فیکا کےلیے ریگ ڈکسن پاکستان کی سی سیکورٹی کا جائزہ لیں گے جس کی رپورٹ موصول ہونے کے بعد پلیئرز کو پاکستان بھجواسکتے ہیں۔

خیال رہےکہ ورلڈ الیون کی ٹیم میں مارٹن گپٹل ،لیوک رونچی اور برینڈن مک کالم بھی شامل ہیں، گپٹل کے سوا دونوں کھلاڑی انٹرنیشنل کرکٹ کو خیر باد کہہ چکے ہیں اور اس بات کا قوی امکان ہے کہ انہیں پاکستان آنے کے لیے بورڈ کے این اوسی کی ضرورت نہیں ہوگی۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *