عائشہ گلالئی کا گھر گرا دیا جائے، مشیر پرویز خٹک

عائشہ گلالئی کا گھر گرا دیا جائے، مشیر پرویز خٹک

بنوں: وزیراعلی خیبرپختونخوا کے مشیر برائے ٹرانسپورٹ اور ماس ٹرانزٹ ملک شاہ محمد خان وزیر نے جرگہ سے کہا ہے کہ اگر عائشہ گلالئی عمران خان پر ہراساں کرنے کا الزام ثابت نہ کر سکیں تو ان کا گھر گرا دیا جائے۔

محمد خان وزیر کا کہنا تھا کہ ہم عائشہ گلالئی سے غیرمشروط معافی کا مطالبہ کرتے ہیں اگر انہوں نے ایسا نہیں کیا تو قبائلی قوانین کے مطابق ان کا گھر گرا دیا جائے گا۔

پاکستان ٹرائب کے نمائندہ کے مطابق بنوں پریس کلب میں نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے قبائلی جرگے سے مطالبہ کیا کہ عائشہ گلالئی کا قبائلی علاقے کا ڈومیسائیل کینسل کیا جائے۔

بدھ کو تحریک انصاف کی جانب سے باغی ہو جانے والی رکن قومی اسمبلی کو اظہار وجوہ کا نوٹس جاری کرتے ہوئے ان کی پارٹی ممبر شپ معطل کردی گئی تھی۔

یہ کارروائی اس انکشاف کے ایک روز بعد کی گئی ہے جس میں عائشہ گلالئی کا کہنا تھا کہ عمران خان نے انہیں ہراساں کیا ہے۔

تحریک انصاف سے راستے الگ کرنے والی خاتون رکن اسمبلی کا کہنا تھا کہ وہ قومی اسمبلی سے مستعفی نہیں ہوں گی کیونکہ یہ نشست لوگوں کی امانت ہے۔

اسلام آباد میں نیوز کانفرنس  کے دوران ان کا کہنا تھا کہ عمران خان خود بھی بلیک بیری رکھتے ہیں اور خواتین رہنماوں کو بھی بلیک بیری رکھنے کی تاکید کرتے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ قوم کی ماوں اور بہنوں کی عزتیں تحریک انصاف میں محفوظ نہیں ہیں کیونکہ عمران خان اور ان کے ارد گرد رہنے والا ٹولہ ان کے درپے رہتا ہے۔

وزیراعلی کے مشیر نے عائشہ گلالئی کی جانب سے عمران خان پر لگائے جانے والے الزامات کو سیاسی خودکشی قرار دیا۔

انہوں نے انکشاف کیا کہ گلالئی کو حکمراں جماعت پاکستان مسلم لیگ نواز کی جانب سے عمران خان کو بدنام کرنے کے لئے رشوت دی گئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ گلالئی کی جانب سے لگائے جانے والے الزامات نے قبائلی خواتیب کے جذبات کو مجروح کیا ہے۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *