ذاتی معاون کا گلالئی پر ایک کروڑ روپے کی کرپشن کا الزام

ذاتی معاون کا گلالئی پر ایک کروڑ روپے کی کرپشن کا الزام

پشاور: تحریک انصاف سے مستعفی ہونے والی خاتون رکن اسمبلی عائشہ گلالئی کے ذاتی معاون نورزمان نے ترقیاتی  کاموں کے لیے ملنے والے فنڈز میں ایک کروڑ روپے کی کرپشن کا الزام لگایا ہے۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام کے مطاب قگلالئی کے معاون نورزمان کی ایک وڈیو جاری ہوئی ہوئی ہے جس میں انہوں نے کہاکہ  عائشہ نے بنوں لنک روڈ تاسدہ خیل روڈ کی تعمیر کےلیے ملنے والے فنڈز میں سے 72 لاکھ روپے کمیشن لیا جس میں سے ساڑھے47 لاکھ میں نے خود وصول کیے۔

نورزمان کے مطابق گلالئی نے لکی مروت ترقیات منصوبے کی رقم سے 12 لاکھ روپے جب کہ کرک منصوبے میں چھ لاکھ روپے کی کرپشن کی۔

ان کے بقول گلالئی نے ساری رقم ہنڈہ خیل میں اپنے چار کنال کے گھر کی تعمیر پر لگائی ہے۔

نورزمان نے گلالئی پر کرپشن کے الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ یہ سارے مالی معاملات ان کے والد دیکھا کرتے تھے، بنوں میں کونسلر  کو ٹکٹ دلوانے کے لیے دس لاکھ روپے کی ڈیل ہوئی اور انہوں نے وہاں واقع اپنے گھر کو بھی اثاثوں میں شامل نہیں کیا۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ شمس القیوم اپنی صاحبزادی کو ملنے والے ترقیاتی منصوبوں میں کرپشن کے ذریعے مال جمع کررہے ہیں اور وہ کہتے ہیں کہ  میں وزیر داخلہ کو بیٹی بناکر گورنر بنوں گا اور سارے معاملات خود دیکھوں گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ عاشہ گزشتہ کئی عرصے سے امیر مقام سے رابطے میں تھی اور دوبار میں خود ان کےساتھ ملاقات کے لیے گیا، تین ماہ قبل انہوںنے گورنر خیبرپختونخوا مہتاب عباسی سے بھی ملاقاتیں کیں، گلالئی اور ان کے والد خود کرپٹ ہیں لیکن وزیر اعلیٰ پر کرپشن کے الزامات عائد کررہے ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں نورزمان کا کہناتھا کہ اگر گلالئی نے الزامات کی تردید کی تو سارے ثبوت پیش کروں گاکیوں کہ لین دین کی ہونے والی انوائسز میرے پاس موجود ہیں۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *