کابینہ کی تشکیل کے معاملات طے نہ ہوسکے، تقریب حلف برداری ملتوی

اسلام آباد: ن لیگ کی اعلیٰ قیادت کے درمیان وفاقی کابینہ کی تشکیل کے معاملات طے نہ ہونے کے سبب کابینہ کی تقریب حلف برداری ملتوی کردی گئی۔

شاہد خاقان عباسی کے گزشتہ روز وزیر اعظم منتخب ہونے کے بعد آج نئی کابینہ کی تشکیل اور اس کے حلف برداری کی تقریب ہونی تھی جو کہ اب ملتوی ہوگئی۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام کے مطابق وفاقی کابینہ کے ارکان کو حتمی شکل دینے کے لیے سابق وزیر اعظم اور مسلم لیگ کے قائد میاں محمد نواز شریف کی زیرصدارت ن لیگ کے مرکزی رہنماؤں پر مشتمل اجلاس ہوا۔

جس میں وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی، وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف، چوہدری نثار، اسحٰق ڈار گونر خیبرپختونخوا مہتاب عباسی، حمزہ شہباز اور دیگ رہنما بھی موجود تھے۔

ذرائع کے مطابق اجلاس کے دوران وفاقی کابینہ کی تشکیل کے حوالے سے ناموں پر تفصیلی غور کیا گیا جب کہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی جانب سے بھی کئی نام تجویز کیے گئے تاہم وزارت خزانہ ،خارجہ، داخلہ اور تجارت کی سپردگی کے معاملات معاملات طے نہیں ہوسکے جس کے بعد آج ہونے والی حلف برداری کی تقریب ملتوی کردی گئی جو کہ معاملات مکمل ہونے کے بعد حلف برداری کی تقریب کل رکھی جائے گی۔

ذرائع نے بتایا کہ نئی کابینہ میں بیشتر ارکان گزشتہ کابینہ کے ہی شامل ہوں گے جب کہ چوہدری نثار کے شاہد خاقان عباسی کی کابینہ میں شامل نہ ہونے کا امکان ہے تاہم شہباز شریف کے وزیر اعظم منتخب ہونے کے بعد انہیں ممکنہ طور پر وزیر خارجہ کا قلمدان سونپا جائے گا۔

ذرائع کا کہنا تھا کہ ذرائع کا کہنا ہے کہ چوہدری نثار کی عدم دلچسپی کے سبب شاہد خاقان کی کابینہ میں وزرات داخلہ کے منصب کے لیے عبدالقادر بلوچ کا نام منظور نظر رہا۔

ذرائع نے  مزید بتایا کہ کابینہ کے معاملات طے نہ ہونے کے باعث ملتوی ہونے والی حلف برداری کی تقریب سے ایوان صدر کو بھی آگاہ کردیا گیا۔

یاد رہے کہ سپریم کورٹ کے 28 جولائی کے فیصلے سے نواز شریف ک نااہل ہونے کے بعد شاہد خاقان عباسی کو وزیر اعظم نامزد کیا تھا۔

گزشتہ روز قومی اسمبلی میں ہونے والے وزیر اعظم کے انتخاب میں شاہد خاقان عباسی بھاری اکثریت سے نئے وزیر اعظم منتخب ہوئے تھے اور انہوں نے اپنے عہدے کا حلف اٹھایا تھا۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *