“آپ کی بات سے نتیجہ اخذ کررہا ہوں” ۔ عمران خان نااہلی کیس کی سماعت : لائیو اپ ڈیٹس

“آپ کی بات سے نتیجہ اخذ کررہا ہوں” ۔ عمران خان نااہلی کیس کی سماعت : لائیو اپ ڈیٹس

اسلام آباد: سپریم کورٹ میں تحریک انصاف کے چیئرمین عمران کے خلاف ممنوعہ فنڈنگ اور نااہلی کیس کی سماعت جاری ہے۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام کے مطاق عمران خان کے خلاف حنیف عباسی کی جانب سے دائر کی گئی درخواست کی سماعت چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں جسٹس عمر عطاء بندیال اور جسٹس فیصل عرب پر مشتمل تین رکنی بینچ کررہا ہے۔

ذیل میں سماعت کے لائیو اپ ڈیٹس دی جارہی ہیں، تازہ ترین اپ ڈیٹس کے لیے پیچ کو ریفریش کیجئے۔

عدالت میں تحریک انصاف کے چیئرمین کی جانب سے جمع کرایا گیا سرٹیفکیٹ ممنوعہ فنڈنگ نہ لینے کی تصدیق کرتا ہے، وکیل حنیف عباسی اکرم شیخ

 جھوٹا سرٹیفکیٹ دینے والوں کو اس کے نتائج بھگتنا ہوں گے۔اکرم شیخ

جھوٹا سرٹیفکیٹ دینے والا صادق اور امین کیسے ہوسکتا ہے، اکرم شیخ

جھوٹا سرٹیفکیٹ دینے کا نتیجہ نااہلی ہوگا، اکرم شیخ

افتخار چیمہ کیس میں عدالت نے 62 ون ایف کا اطلاق کیا اور انہیں عوامی نمایندگی ایکٹ کے سیکشن 99 ایف کے تحت نااہل کیا گیا، وکیل حنیف عباسی

پولیٹیکل پارٹیز آرڈرسیاسی جماعتوں کو صرف ضابطہ کار کے تحت پابند کرتا ہے، یہ آرڈر کسی پارٹی کےرکن یا سربراہ کی نااہلی کا احاطہ نہیں کرسکتا، اکرم شیخ کے دلائل

پہلے آپ کو ممنوعہ فنڈ ثابت کرنا ہوں گے، پی ٹی آئی کے مطابق ممنوعہ فنڈ پاکستان منتقل ہی نہیں ہوئے، جسٹس عمر عطاء بندیال کے ریمارکس

تمام سیاسی جماعتوں کو موصول فنڈز کی تفصیلات دینا ہوتی ہیں، پارٹی سربراہ کا سرٹیفیکٹ موصول فنڈز کی بنیاد پر ہوتا ہے، چیف جسٹس کے ریمارکس

قانون کے تحت فنڈز جمع کرنے اور موصول ہونے میں فرق نہیں، اکرم شیخ کے دلائل

بیرون ملک ایجنٹ پی ٹی آئی کا حصہ ہیں، ممنوعہ فنڈنگ تسلیم کی گئی، اکرم شیخ

کیابینک رکارڈ میں ممنوعہ فنڈز شامل ہیں، جسٹس فیصل عرب کا سوال

قانون میں بینک ریکارڈ کا ذکر کسی اور تفصیل کا نہیں، جسٹس فیصل عرب

ممنوعہ فنڈنگ کی تصدیق الیکشن کمیشن نے کرنی ہے، چیف جسٹس کے ریمارکس

الیکشن کمیشن کا اس معاملے سے کوئی تعلق نہیں، عدالت نے الیکشن کمیشن کو بطور انکوائری کمیشن بنانے کی ہدایت کی تھی، اکرم شیخ

اگر کمیشن بنایا گیا تو اسے تمام فنڈنگ کی تحقیقات کا حکم دیا جائے۔ اکرم شیخ کی استدعا

کن شواہد کی بنیاد پر فنڈز کو ممنوعہ قراردیں، چیف جسٹس کا استفسار

غیر متنازعہ شواہد پیش کریں، چیف جسٹس

پی ٹی آئی نے دستاویزات میں خود ممنوعہ فنڈںگ تسلیم کی، کہا گیا کہ فنڈ لیا لیکن پاکستان نہیں بھجوایا، اکرم شیخ

فنڈ کا پاکستان آنا کہاں تسلیم کیا گیا ہے، چیف جسٹس کا سوال

سرٹیفکیٹ پاکستان منتقل ہونے والے فنڈز پر دیا گیا ہے۔ چیف جسٹس

پی ٹی آئی کا دوہری شہریت کے حامل افراد سے لیا گیا فنڈ بھی ممنوعہ ہے، ملٹی نیشنل کمپنیز سے بھی فنڈ لیا گیا، اکرم شیخ

تحریک انصاف نہ کوئی کمپنی ہے اور نہ کوئی رجسٹرڈ سوسائٹی، جسٹس عمر عطاء بندیال کے ریمارکس

ایجنٹ نے ممنوعہ فنڈ نہ لینے کا حلف نامہ دیا ہے، اس صورتحال میں عمران خان کو نااہل کیسے قراردیں، جسٹس بندیال

ممنوعہ فنڈز بھی تحریک انصاف کے لیے لیے گئے تھے، اکرم شیخ

کیا آُپ نے پی ٹی آئی کی آڈٹ رپورٹس دیکھیں؟ جسٹس بندیال کا سوال

تحریک انصاف کے تین مختلف بینکوں میں اکاؤنٹس ہیں اور تینوں دارالحکومت سے چلائے جارہے ہیں۔ چیف جسٹس

فارا ویب سائٹ اور پی ٹی آئی اکاؤنٹس کا موازنہ کیا جاسکتا ہے، پی ٹی آئی امریکا اور پی ٹی آئی یو ایس ایل ایل سی دونوں مختلف معاملات ہیں، جسٹس عمر عطاء بندیال

اگر ممنوعہ فنڈنگ کی منتقلی کی تصدیق ہوئی تو نتائج دیکھنا ہوں گے، جسٹس بندیال

پی ٹی آئی یو ایس ایل ایل سی تحریک انصاف کے لیے ہی فنڈںگ کرتی ہے، کمپنی کے معاہدے میں لکھا گیا ہے کہ فنڈز تحریک انصاف کی سرگرمیوں پر خرچ ہوں گے،

 اکرم شیخ

معادہدے میں کہاں لکھا گیا ہے کہ فنڈز پاکستان منتقل ہوں گے،جسٹس عمر عطا بندیال

کمپنی معاہدے میں ممنوعہ فنڈز نہ لینے کا ذکر نہیں، فنڈز زیادہ لیے گئے اور کم دکھائے گئے۔ اکرم شیخ

عدالت جواب الجواب سن کر جو چاہے فیصلہ کرے، اس نے حال ہی میں ایک اہم فیصلہ کیا ہے، عوام 28 جولائی کے فیصلے کو بھی دیکھ رہے ہیں  اور کسی بدنیتی سے بات نہیں کررہا۔اکرم شیخ

لگتا ہے عدالت کو دلائل سے مطنین نہیں  کر پارہا ،کیلی فورنیا سے 11لاکھ 56 ہزار ڈالر پی ٹی آئی کو ملے،فنڈز 2013کے بعد ملے، اکرم شیخ

اب تک تک فنڈز کی نوعیت کا تعین نہیں ہوسکا، تمام فنڈز کا جائزہ لینا ہوگا، آپ چاہتے ہیں فیصلہ 184/3 میں ہی ہوجائے،  چیف جسٹس

الیکشن کمیشن کے پاس عمران خان کو نااہل قرار دینے کا اختیار نہیں، اکرم شیخ

پی ٹی آئی کو ٹیکساس سے 23لاکھ ڈالرز ملے ،دستاویزات کے مطابق 23میں سے 20لاکھ ڈالرز بھجوائے گئے، اکرم شیخ

غیرملکی افراد او ر کمپنیز کی فنڈنگ خفیہ رکھی گئی، عدالت نے بیرون ملک سے فنڈںگ نہ روکی تو فلڈ گیٹ کھل جائے تا، اکرم شیخ

غیر ملکی پیسے کا دروازہ بند کرنے کے لیے متعلقہ فورم موجود ہے، چیف جسٹس

عدالت نے بھی ملک کے تحفظ کا حلف اٹھایا ہے۔ اکرم شیخ

فنڈنگ میں کتنا فنڈز ممنوعہ ہے اس کے تعین کے لیے تحقیقات ہونی چاہئے، جسٹس بندیال

فنڈںگ کی تحقیقات کے لیے تحریک انصاف الیکشن کمیشن کا دائرہ کار تسلیم نہیں کرتی، وکیل حنیف عباسی

دائرہ اختیار کا فیصلہ عدالت کرے گی، چیف جسٹس

امریکی کمپنی پولیٹیکل پارٹیز آرڈر کی نہیں امریکی قانون کی پابندہے، جسٹس بندیال

امریکا میں بھی بیٹھ کر پاکستانی شہری وفاداری کا پابند ہوتا ہے، اکرم شیخ

یہاں بات فنڈنگ کی ہے کسی سازش کی نہیں، جسٹس عمر عطاء بندیال

پولیٹیکل پارٹی آرڈرکاسیکشن6 وہ نہیں کہتا جو آپ کہہ رہے ہیں،جسٹس عمرعطا بندیال

پولیٹیکل پارٹیز آرڈر آئین کے آرٹیکل17 کے تحت بنا،چیف جسٹس

آپ کے مطابق دوہری شہریت والے بھی غیرملکی ہیں، چیف جسٹس کا سوال

اگرکوئی پاکستانی کمپنی کسی سیاسی جماعت کےرکن کوڈنردے توکیاوہ ممنوع ہے؟ کیا ایسا ڈنر پاکستان کی خود مختاری کے خلاف ہو گا؟جسٹس عمرعطا بندیال

لسے میں ہوٹل اور کھانے کا خرچہ اٹھانے والا بھی ظاہر کرنا ہوتا ہے،اکرم شیخ

آپ کا الزام غیرملکی حکومت سے مدد لینے کا نہیں، فنڈنگ کا ہے، آپ نے غیرمسلموں کے ناموں کا بھی ذکر کیا تھا لیکن آپ کے پاس شواہد صرف فارا ویب سائٹ کے ہیں۔ کس بنیاد پر عمران خان کے سرٹیفکیٹ کو جھوٹا کہیں؟ چیف جسٹس

آپ کی بات سے یہ نتیجہ اخذ کر رہا ہوں، وکیل حنیف عباسی

ہم صرف سوچ رہے ہیں نتیجہ نہیں سنارہے،چیف جسٹس

درخواست گزارکی دی فہرست میں ممنوع ذرائع صرف غیرملکی کمپنیوں کےہیں، آپ کی دستاویزات میں بھی کئی مسائل ہیں، چیف جسٹس

یہ بھی بتانا ہوگاکیاغیرملکیوں سے فنڈز لیےجاسکتے ہیں؟ واضح نہیں ہورہا کہ کس نے کتنے فنڈز دیے؟ معاملے کی تحقیقات عدالت نہیں کرسکتی، چیف جسٹس

کیلیفورنیا سے40ہزارڈالرغیر ملکی کمپنیوں سے لیے گئے، ممنوعہ فنڈ اگر امریکا میں خرچ ہوجائے تو کیا درست ہو گا؟ اکرم شیخ کا سوال

کیا معلوم یہ کمپنیاں پاکستانیوں کی ہوں یاٹریڈنام رکھےگئےہوں، چیف جسٹس

اگر پاکستانی کمپنی ہو تو بھی فنڈ ممنوعہ ہوگا، اکرم شیخ

اس حد تک متفق ہیں کہ غیرملکیوں سےفنڈنگ نہیں لی جاسکتی، چیف جسٹس

کمپنیوں کے ان کارپوریشن سرٹیفکیٹ لانے کا بوجھ نہیں اٹھا سکتا۔ اکرم شیخ

شیخ صاحب یہی تو اصل مسئلہ ہے، چیف جسٹس

کیا آڈٹ کرنیوالےکوممنوعہ فنڈنگ سےمتعلق سوال کابتایاگیا؟چیف جسٹس

یہ سوال الیکشن کمیشن سے کیاجائے، پارٹی اکاؤنٹس کی تفصیلات چارٹرڈ اکاؤنٹنٹ نہیں کرتا ،اکرم شیخ

کیس سے قبل وزارت داخلہ سے معلومات حاصل کی تھیں،اکرم شیخ

جمائمہ نے فنڈز دیے لیکن انہوں نے کبھی پاکستانی شہرت نہیں لی، وکیل حنیف عباسی

آپ کی باتوں سے لگتاہے کہ عمران خان کے بچے بھی انہیں فنڈز نہیں دے سکتے، جسٹس فیصل عرب

عمران خان کے بچے پاکستانی شہریت نہیں رکھتے،اکرم شیخ

ہمیں ان باتوں میں نہیں جانا چاہیئے، یہ ذاتی معاملہ ہے، چیف جسٹس

اگر کوئی خود کو پاکستانی ظاہر کرے تو کیا ہوگا؟چیف جسٹس

فنڈز دینے والے کا نام اور دیگر تفصیلات بھی سامنے آنی چاہیئے، اکرم شیخ

 

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *