عمران خان نااہلی کیس کی سماعت

عمران خان نااہلی کیس کی سماعت

اسلام آباد: سپریم کورٹ میں تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے خلاف ممنوعہ فنڈنگ اور نا اہلی کیس کی سماعت جاری ہے۔

کیس کی سماعت چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں جسٹس فیصل عرب اور جسٹس عطا بندیال پر مشتمل تین رکنی بینچ کررہا ہے۔

چیف جسٹس کا اپنے ریمارکس میں کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن کی تسلی نہ ہو تو سیاسی جماعت کو انتخابی نشان الاٹ نہیں ہوتا، سرٹیفکیٹ کا مقصد الیکشن کمیشن کی تسلی کروانا ہے۔

ذیل میں منگل کو ہوئی سماعت کی مکمل تفصیل ججز کے ریمارکس اور وکلاء کے دلائل کی صورت میں دی جا رہی ہے:

ضروری نہیں ہرکیس میں جے آئی ٹی بنائی جائے،مقصد سچائی تک پہنچنا ہوتاہے، عدالت اپنے اسٹاف سے فارا کی ویب سائٹ کھلوا کر دیکھ لے،اکرم شیخ

شیخ صاحب،ہم انکوائری کے معاملے میں محتاط ہیں،ہمارا کام شواہد جمع کرنا نہیں، عمران خان کے وکیل کو سرٹیفکیٹ سےمتعلق بتانا ہوگا، چیف جسٹس

تحریک انصاف کے وکیل انور منصور کا کہنا تھا کہ میرے بیان کو غلط انداز میں پیش کیا جارہا ہے۔

ممنوعہ فنڈنگ ثابت ہونے پر فنڈںگ ضبط ہوسکتی ہے لیکن قانون میں اس پر نااہلی نہیں، کیا عمران خان کو فرائض میں غفلت برتنے پر نااہل قراردے دیں۔چیف جسٹس کے ریمارکس

پی ٹی آئی کی فنڈنگ مشکوک ہے، فنڈنگ کے ذرائع میں شفافیت نہیں، چند ناموں کو بار بار لکھا گیا ہے۔ کاغذات خود کہہ رہے ہیں کہ ہم جعلی ہیں۔ اکرم شیخ

جسٹس فیصل عرب نے ریمارکس دیے کہ کیا حکومتیں امریکا سے پیسے نہیں لیتیں؟ یہ ایک اچھی بات ہے کہ بیرون ملک سے فنڈز آر ہے ہیں۔ صرف ایک شخص نے 5 ہزار ڈالر لئے باقی سو پچاس ہی ہیں۔

 

قانون کے مطابق ممنوعہ فنڈ ضبط ہو جاتا ہے، قانون میں اس پر نااہلی نہیں ہو سکتی، آپ نے درخواست میں وفاقی حکومت کو حکم دینے کی استدعا نہیں کی، چیف جسٹس

عمران خان نے کہا کہ ممنوعہ ذرائع سے کوئی فنڈز نہیں لیے، میں فنڈز ضبط کرنے کے حق میں نہیں، اکرم شیخ

غیر شفاف سیاست پر جمہوری نظام لپیٹا جاتا ہے، عدالت کی ذمے داری ہے کہ جمہوریت برقرار رکھے، شفاف سیاست جمہوری عمل کے لیے ناگزیر ہے، جمہوریت کا تحفظ ضروری ہے،آزاد عدلیہ کے لیے جمہوریت ضروری ہے، اکرم شیخ

کہیں بھی کوئی رکن اسمبلی غلط بیانی کرے تو کیا آرٹیکل 62 لگے گا؟ کیا ہر کیس میں آرٹیکل 62 لگایا جا سکتا ہے، جسٹس فیصل عرب

وزارت داخلہ کے خلاف بھی کوئی ریلیف نہیں مانگا گیا، چیف جسٹس

درخواست میں پی ٹی آئی کو غیر ملکی فنڈز پارٹی قرار دینے کی استدعا کی ہے، وزارت داخلہ کو فریق بنانے کی استدعا کی تھی، اکرم شیخ

عدالت میں تنخواہ نہ ظاہر کرنے پر وزیر اعظم نااہل ہو گئے، عام آدمی اور لیڈر کےلیے معیار مختلف ہونا چاہیے، کیا نجی معاملات میں صادق اور امین کا معاملہ اٹھایا جا سکتا ہے؟ کیا نجی معلومات میں غلط بیانی پر آرٹیکل 62 لگے گا؟ اکرم شیخ

آپ کی درخواست خارج نہیں کی تھی، وزیر اعظم کی نااہلی سے متعلق فیصلے پر کوئی تبصرہ نہیں کر رہے، چیف جسٹس

قانون میں اثاثے ظاہر نہ کرنے پر نااہلی لکھی گئی ہے، چیف جسٹس

کاغذات نامزدگی میں اثاثے ظاہر نہ کریں تو نااہلی ہوتی ہے، اکرم شیخ

عمران خان کو کن گراؤنڈز کی بنیاد پر نااہل قراردیا جئے، چیف جسٹس کا حنیف عباسی کے وکیل اکرم شیخ سے سوال

عوامی نمایندگی ایکٹ میں غلط سرٹیفکیٹ پرنااہلی کی سزاکاذکر نہیں، قانون میں غلطی اور اس کے نتائج دونوں موجود ہوتے ہیں۔ چیف جسٹس

عمران خان نے ممنوعہ فنڈنگ نہ لینے کا غلط سرٹیفکیٹ دیا جو کہ نااہلی کا سب بنتا ہے، وکیل حنیف عباسی اکرم شخ

پہلے تو سرٹیفکیٹ کو غلط ثابت کرنا ہوگا،عوامی نمائندگی ایکٹ میں بھی جعلی سرٹیفکیٹ پرقانونی نتائج بھگتنے کا ذکر نہیں،چیف جسٹس کے ریمارکس

کیا یہ درست ہے ہے کہ یو ایس ایل ایل سی پی ٹی آئی کی ایجنٹ ہے، چیف جسٹس کا عمران خان کے وکیل انور منصور سے سوال

یہ درست ہے کہ پی ٹی آئی یو ایس ایل ایل سے فنڈ جمع کرتی ہے اور یہ بھی درست ہے کہ وہ ہماری ایجنٹ ہے۔ انور منصور

کیا تحریک انصاف نے فارا کو فنڈ کی تفصیلات جمع کرائیں، عدالت کا سوال

فارا کو تفصیلات فراہم کرنے کی ذمہ داری ایجنٹ کی ہے، انور منصور

 آپ کے پاس جو فہرست ہے کیا وہ فارا کی ویب سائٹ پر موجود ہے، جسٹس فیصل عرب کا سوال۔

جو فہرست جمع کرائی وہ فارا کی ویب سائٹ پر موجود ہے،انور منصور

اگر یو ایس ایس ایل ممنوعہ ذرائع سے فنڈنگ کرے تو کیا کرنا چاہیئے ،عدالت کا سوال

یو ایس ایس ایل تحریک انصاف امریکا کی ہدایت کے مطابق فنڈنگ کرتی ہے، وکیل انور منصور

محمد نصراللہ فارا کے تمام معاملات کو دیکھتا ہے اور محمد نصر اللہ فارا کے پاس تحریک انصاف کا ایجنٹ ہے اور انہوں نے بھارتی کمپنیوں سے تحریک انصاف کے لیے فنڈنگ کی،اکرم شیخ

برائٹ سمائل سمیت195 کمپنیوں سے فنڈز لیے گئے،اکرم شیخ

اتنی مشکل بات کو عام آدمی کیسے سمجھے گا، جسٹس میاں ثاقب نثار

آپ کے ریمارکس کی ہیڈ لائنز بن جائیں گے، عمران خان کی کرکٹ کھیل کے بارے میں بتاؤں گا ، وہ بہت محنتی آدمی ہیں  اور انہوں نے اسٹیبلشمنٹ سمیت کئی لوگوں کو متاثر کیا، وکیل حنیف عباسی

لگتا ہے آپ میڈیا میں ہیڈلائنز چھپوانے کے لیے ایسی باتیں کررہے ہیں، جسٹس عمر عطاء بندیال کا جواب

میرے علم میں نہیں کہ عدالت میں میڈیا موجود ہے، اکرم شیخ

تحریک انصاف نے فنڈںگ سے متعلق غلط دستاویزات جمع کرائیں اور کہا گیا کہ یہ ایجنٹ کی غلطی ہے جو درست نہیں، تحریک انصاف چاہتی تو ویب سائٹ پر دیکھ سکتی تھی۔وکیل انور شیخ

ممکن ہے کہ دستاویزات میں ٹائپنگ کی غلطی ہو، سپریم کورٹ

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *