عمران خان کے بیان پر جسٹس کھوسہ سے تحقیقات کی جائیں,، ہاشمی

عمران خان کے بیان پر جسٹس کھوسہ سے تحقیقات کی جائیں,، ہاشمی

ملتان: پاکستان تحریک انصاف کے سابق صدر اور سینیر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی نے کہاہے کہ عمران خان نے اعتراف کیا ہے کہ انہیں پاناما کا معاملہ سپریم کورٹ میں اٹھانے کے لیے جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا تھا جس پر جسٹس کھوسہ سے تحقیقات کی جائیں۔

صوبہ پنجاب کے صدر مقام ملتان میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عمران خان نے تحریک انصاف کے دھرنے کے وقت بھی پارلیمنٹ توڑنے سے متعلق ایک جج کا حوالہ دیا تھا۔

جاوید ہاشمی کے مطابق عمران خان نے دھرنے کے وقت کہا تھا کہ جسٹس تصدق جیلانے کے بعد آنے والے جج پارلیمنٹ توڑدیں گے اور ٹیکنو کریٹ کی حکومت کے بعد ستمبر میں انتخابات ہوں گے۔

ان کے بقول میں ایک ایک لفظ حلف اٹھاکر کہہ رہا ہوں، پی ٹی آئی سربراہ نے کہا تھا کہ عمران خان نے کہا تھا کہ نوازشریف خودمستعفی ہوجائے گا اور پھر انتخابات میں کوئی ہمارا مقابلہ کرنے کی جرات کوئی نہیں کرے گا۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان حلف اٹھاکر میرے بیان کی تردید کریں، شیخ رشید، شیریں مزاری اور دیگر رہنما میرے پاس آئیں اور کہا کہ عمران خان پارلیمنٹ پر حملے کی تیاری میں بیٹھے ہیں، انہیں سمجھائیں۔

جاوید ہاشمی کا کہنا تھا کہ میں نے عمران خان کی پالیسیوں اور اقدامات پر جب استعفے کا فیصلہ کیا تو مجھے باہر سے تحریک انصاف میں فارورڈ بلاک بنانے کی پیشکش کی گئی لیکن میں نے جواب دیا کہ میں جماعت میں فارورڈ بلاک کے لیے بلکہ اسے تقویت پہنچانے کے لیے آیا ہوں، میں ایک جمہوری سیاستدان ہوں کسی ایسے اقدام کی حمایت نہیں کروں گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ملک کے آئین کو اپنی ماں کی طرح سمجھتا ہوں اور اگر کوئی اس کے خلاف جائے گا تو اس کی حمایت کیسے کروں گا، پی ٹی آئی نے اپنے یوم تشکر میں غنڈے اور بھگوڑے کی تصویر پیش کی، پرویز مشرف نے آئین کی دھجیاں بھکیریں اور جب انصاف کا گھنٹہ بجا تو وہ ملک چھوڑ کر بھا گ گیا۔ ان کا کہنا تھا کہ عمران خان کی سیاست ملکی مفاد میں نہیں۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *