سپریم کورٹ کا ظفر حجازی کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم

سپریم کورٹ کا ظفر حجازی کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم

اسلام آباد: سپریم کورٹ آف پاکستان نے پاناما کیس کی جے آئی ٹی رپورٹ پیش کئے جانے کے موقع پر چئیر مین ایس ای  سی پی ظفر حجازی کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا ہے۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام نمائندہ اسلام آباد کے مطابق پیر کو سپریم کورٹ آف پاکستان نے حکم جاری کرتے ہوئے آج یعنی پیر ہی کو سرکاری ادارے کے سربراہ کے خلاف اندراج مقدمہ کا حکم دیا ہے۔

سیکیورٹی اینڈ اسیکچینج کمیشن آج پاکستان (ایس ای سی پی) کے چئیرمین پر الزام ہے کہ انہوں نے اپنے دو ماتحت افسران کو استعمال کر کے شریف خاندان کے مالیاتی ریکارڈ میں ردو بدل کیا ہے۔

پاناما عملدرآمد بینچ میں شامل جسٹس اعجاز افضل کا دوران سماعت کہنا تھا کہ یہ بھی دیکھنا ہو گا ظفر حجازی نے کس کے کہنے پر ریکارڈ میں ٹیمپرنگ کی۔

ایس ای سی پی چئیرمین کے متعلق ٹیمپرنگ میں ملوث ہونے کا انکشاف وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف آئی اے کی عدالت میں جمع کردہ رپورٹ میں کیا گیا تھا۔

یہ بھی جانیں: جے آئی ٹی کے متعلق غلط رپورٹنگ پر جنگ گروپ کو توہین عدالت کا نوٹس

ایف آئی اے نے اپنی رپورٹ میں یہ سفارش کی تھی کہ چئیرمین ایس ای سی پی کے خلاف فوجداری جرائم کے قوانین کے تحت مقدمہ درج کیا جائے۔

رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا تھا کہ ظفر حجازی نے ایس ای سی پی کی ڈائریکٹر انفورسمنٹ ماہین فاطمہ کے ذریعے شریف فیملی کے مالیاتی ریکارڈ میں ردو بدل کی تھی۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *