عمران خان کی بہنیں یہاں پیش ہوں تب بھی مجھے برا لگے گا،اسحاق ڈار

عمران خان کی بہنیں یہاں پیش ہوں تب بھی مجھے برا لگے گا،اسحاق ڈار

اسلام آباد:وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا کہنا ہے کہ جے آئی ٹی نے مجھ سے جو سوالات کیے میں نے ان کے جواب دیے۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام کو موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق جے آئی ٹی پیشی کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ اب یہ تماشا ختم ہو جانا چاہیے۔

ان کا کہنا تھا کہ مریم نواز کا کیا قصور ہے۔ مجھے برا لگ رہا ہے کہ مریم نواز کو یہاں بلایا جا رہا ہے۔ کل کو علیمہ بہن یا عظمیٰ بہن کو بلایا جائے گا تو بھی ہمیں برا لگے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ مجھے دو سے تین سمن جاری کرنے کی خبر غلط ہے،مجھے ایک دفعہ بلایا گیا اور میں تین بجے سے پہلے آگیا۔

ان کا کہنا تھا کہ 23 سال سے یہ تماشا لگا ہوا ہے اب یہ تماشا ختم ہو جانا چاہیے۔ معاملات شفاف ہیں،وزیر اعظم کا نام نہ ہی پاناما پیپرز میں ہے نہ ہی کسی اور جگہ ہے۔

اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ چند ریفرنسز مشرف کے دور میں بھی بنائے گئے تھے۔ مشرف نے جو ریفرنس افتخار حسین کے خلاف بنائے وہ ججز نے پھینک دیے۔ جج کے لیے الگ قوانین اور وزیر اعطم کے بچوں کے لیے الگ قوانین کیوں۔

اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ عمران خان کے ساتھ لو اینڈ ہیٹ کا پرانا رشتہ ہے، عمران خان 1993 میں میرے بیٹوں کے ساتھ بیٹھ کر میرا انتظار کرتے تھے۔

اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ میں عمران خان کو جو عطیات دیتا تھا اور وہ میرا اور میرے اللہ کا معاملہ ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ عمران خان کس منہ سے نواز شریف کے خلاف 62 اور 63 کیس کا زکر کرتا ہے۔ عمران خان کے لیےکیلیفورنیا کیس ہی کافی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ عمران خان بنیادی طور پر ایک ڈرپوک آدمی ہے جو آدمی اپنی شادی چھپائے وہ اور کیا کر سکتا ہے

ان کا کہنا تھا کہ عمران خان کے جھوٹ اس کے منہ پر آئیں گے صرف سچ باقی رہے گا۔ اسحاق ڈارکا کہنا تھا کہ عمران خان آج دوسرا امیر ترین پارلیمنٹیرین کیسے بن گیا۔

انہوں نے میں عمران خان کو شوکت خانم کے لیے عطیات دیتا رہا اور وہ عطیات کے پیسوں سے جوا کھیلتا رہا۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان بتائیں کہ ان کی وفاداری پاکستان کے ساتھ ہے یا یہودیوں کے ساتھ۔

گفتگو کے دوران صحافی نے سوال کیا کہ ڈار صاحب آپ غصے میں کیوں لگ رہے ہیں،جس پر وزیر خزانہ نے جواب دیا کہ میں غصے میں نہیں ہوں،دھوپ بہت تیز ہے۔

 

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *