ہیکرز انسانی دماغ سے بھی پاسورڈ نکال سکتے ہیں

ہیکرز انسانی دماغ سے بھی پاسورڈ نکال سکتے ہیں

نیویارک: ہیکرز کے پاس لوگوں کے پاس ورڈز ہیک کرنے کے کئی طریقے موجود ہیں لیکن اب سائبرسکیورٹی ماہرین نے ایک ایسے طریقے کا انکشاف کر دیا ہے کہ جان کر آپ کے ہوش اڑ جائیں گے۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام ٹیکنالوجی ڈیسک کے مطابق یونیورسٹی آف الباما کے ماہرین کا کہنا ہے کہ  ہیکرز،برین ویو سینسنگ ہیڈ سیٹ جنہیں(ای ای جی) بھی کہا جاتا ہے،لوگوں کے دماغ پڑھنے کے لیے استعمال کر سکتے ہیں۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ اس ہیڈ سیٹ کے ذریعے ہیکرز لوگوں کے دماغ کی لہروں تک رسائی حاصل کر سکتے ہیں اور ان کے دماغ میں محفوظ اپنے اکاؤنٹس کے پاس ورڈ معلوم کر سکتے ہیں۔

تحقیقاتی ٹیم کے رکن ایسوسی ایٹ پروفیسر نتیش سکسینا کا کہنا تھا کہ  یہ ہیڈ سیٹ 150ڈالر(تقریباً 15ہزار روپے)سے 800ڈالر(تقریباً80ہزار روپے) میں دستیاب ہیں جو گیم کنٹرولر کے طور پر بھی استعمال ہوتے ہیں اور ان کے کئی دیگر استعمالات بھی ہیں لیکن ان کے ذریعے ہیکرز کے لیے ہیکنگ کے نئے دروازے کھل گئے ہیں۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ ہیڈسیٹ بنانے والی کمپنیوں کو ان میں ایسی ٹیکنالوجی استعمال کرنی ہو گی کہ ہیکرز ان کے ذریعے لوگوں کے دماغ کی لہروں تکرسائی حاصل نہ کر سکیں۔

 

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *