آٹزم کا شکار افراد،بہترین فیصلہ ساز

آٹزم کا شکار افراد،بہترین فیصلہ ساز

لندن: ایک نئی تحقیق کے مطابق آٹزم کا شکار افراد کوئی بھی فیصلہ کرنے سے پہلے نہایت باریک بینی سے جائزہ لیتے لیتے ہیں جس کی وجہ سے ان کا فیصلہ دوسروں کو متاثر کرتا ہے۔

پاکستان ٹرائب ہیلتھ ڈیسک کے مطابق کیمبرج یونیورسٹی کی جانب سے کی گئ ایک تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ آٹزم کا شکار افراد کسی بھی معاملے مین فیصلہ کرنے سے پہلے نہایت باریک بینی سے جائزہ لیتے ہیں۔

ریسرچ کے مطابق ایسے افراد بہت ساری اشیاء میں سے بہترین کا انتخاب کرنے سے پہلے اچھی طرح تمام پہلوؤں کا جائزہ لیتے ہیں جس کی وجہ سے ان کا انتخاب دوسروں کو متاثر کرتا ہے۔

ماہرین نے اس حوالے سے 90 آٹزم کا شکار اور 212 نارمل لوگوں پر ایک تحقیق کی جس انہیں کچھ معاملات میں فیصلہ کرنے کا کہا گیا۔

ریسرچ کے مطابق آٹزم کا شکار افراد نے ان معاملات میں بہترین فیصلہ دیا جو یہ ظاہر کرتا ہے کہ اس مرض کا شکار افراد بہترین فیصلہ ساز ہوتے ہیں۔

فزیالوجی ریسرچر جارج فارمر کا کہنا ہے کہ آٹزم کا شکار افراد کم یا ادھوری معلومات پر کبھی فیصلہ نہیں دیتے بلکہ وہ ہر معاملے میں خوب چھان بین کرنے کے عادی ہوتے ہیں اور یہی بات انہیں منفرد بناتی ہے۔

یاد رہے کہ دنیا کے سب سے امیر شخص بل گیٹس سمیت کئی مشہور شخصیات اس بچپن میں اس مرض کا شکار رہی ہیں۔

 

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *