بغیر بیٹری والا موبائل فون ایجاد

بغیر بیٹری والا موبائل فون ایجاد

واشنگٹن: دنیا بھر میں تیزی سے اسمارٹ فون کے استعمال کا رجحان بڑھتا جارہا ہے لیکن موبائل فون کی بیٹری جلد ختم ہونا ایک تکلیف دہ مسئلہ ہے تاہم ماہرین نے اس کا حل بھی ڈھونڈ نکالا ہے۔

پاکستان ٹرائب ٹیکنالوجی ڈیسک کے مطابق یونیورسٹی آف واشنگٹن کی تحقیقاتی ٹیم نے ایسا موبائل فون ایجاد کیا ہے جو بغیر بیٹری کے چلتا ہے جب کہ یہ موبائل فون ہوا اور ریڈیو کی لہروں سے توانائی حاصل کرتا ہے۔

ماہرین کے مطابق بغیر بیٹری کے چلنے والے موبائل فون کے لئے،بیکس کیٹر ٹیکنالوجی،کا استعمال کیا گیا ہے اور اس کے ذریعے فضا میں پہلے سے موجود ریڈیو کے سگنلز کو استعمال کرتے ہوئے معلومات کا تبادلہ کیا جاتا ہے۔

اس سے قبل یونیورسٹی آف واشنگٹن کی اسی ٹیم نے ہوا سے توانائی حاصل کر کے گانے گانے والا پوسٹر ایجاد کیا تھا جو مختلف مقامات پر آویزاں ہیں جس کی مدد سے 12 میٹر دوری سے پوسٹر پر موجود گلوکار کا گانا اپنے موبائل فون میں سنا جاسکتا ہے جب کہ اسی ٹیم نے بیکس کیٹر ٹیکنالوجی کے ذریعے پیسو وائی فائی سسٹم بھی ایجاد کیا تھا۔

ماہرین نے بغیر بیٹری کے چلنے والے موبائل فون کا تصور سرد جنگ کے دوران سویت یونین کے جاسوسوں کے استعمال کردہ خفیہ آڈیو بگ سے لیا ہے اور ان کا ایجاد کردہ موبائل فون صرف ریڈیو کے سگنلز کی مدد سے ہی ایک محدود فریکوئنسی پر ہی چلتا ہے۔

 لیڈ ریسرچر شیام گولاکٹ  کے مطابق وائی فائی،بلوٹوتھ اور ریڈیو کی لہروں کو منتقل کرنے کے لئے سیل کی ضرورت ہوتی ہے تاہم بیٹری کے بغیر چلنے والا موبائل فون ریڈیو کے سگنلز کو ہی توانائی میں تبدیل کر کے کمیونیکیشن کا کام کرے گا۔

ان کا کہنا ہے کہ  بیکس کیٹرنگ نظام ریڈیو کے سگنلز کی مدد سے آڈیو پیغامات کو دوسری ڈیوائس تک منتقل کرتا ہے اور اس عمل کے دوران ریڈیو ٹرانسمیشن بالکل بھی متاثر نہیں ہوتی۔

ماہرین امید ظاہر کی ہے کہ مستقبل میں بیکس کیٹرنگ ٹیکنالوجی کو استعمال کرتے ہوئے بڑے پیمانے پر اس پر کام ہوگا اور یہ ٹیکنالوجی اسمارٹ فون کی دنیا میں انقلاب برپا کرے گی۔

 

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *