مطالبات نہ مانے گئے تو پورے ملک میں دھرنے،علامہ ناصرعباس

مطالبات نہ مانے گئے تو پورے ملک میں دھرنے،علامہ ناصرعباس

پاراچنار: چند روز قبل یکے بعد دیگرے دھماکوں کے نتیجے میں 75 افراد کے مارے جانے اور اڑھائی سو سے زائد کے زخمی ہونے کے خلاف قبائلی علاقے پارہ چنار میں دھرنے کا سلسلہ پانچویں روز بھی جاری ہے۔

پارہ چنار میں مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مجلس وحدت المسلمین کے رہنما علامہ راجاںاصر عباس نے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اگر مطالبات نہ مانے گئے تو پورے ملک میں دھرنے دیں گے۔

پارہ چنار کے مظاہرین سے اظہار یکجہتی کے لئے عید کے دوسرے روز کراچی کے علاقے نمائش چورنگی پر بھی علامتی دھرنا دیا گیا جس سے رہنماؤں نے خطاب کئے۔

قبل ازیں دھرنے کے شرکاء کا کہنا تھا کہ وہ صرف اسی صورت میں احتجاج ختم کریں گے کہ اگر انہیں وزیراعظم یا آرمی چیف ذاتی طور پر آئندہ ایسے واقعات نہ ہونے کا یقین دلائیں گے۔

طوری بازار میں ہونے والے دھماکوں کے بعد مظاہرین پی اے چوک میں مسلسل دھرنا دئے ہوئے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ گورنر یا کور کمانڈر کی یقین دہانیوں پر اس لئے اعتبار نہیں کریں گے کہ وہ اپنے ماضی کے وعدوں کو پورا نہیں کرسکے ہیں۔

مظاہرین نے سیکیورٹی انتظامات پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ متعدد چیک پوسٹوں کی موجودگی کے باوجود بمبار کیسے علاقے میں پہنچ کرکارروائیاں کرنے میں کامیابی حاصل کر لیتے ہیں۔

قبل ازیں کرم ایجنسی کے صدر مقام پارہ چنار میں رواں برس جنوری میں دھماکہ ہوا تھا جس میں 24 افراد مارے گئے تھے۔ کالعدم لشکر جھنگوری العالمی اور تحریک طالبان پاکستان سے الگ ہونے والے ایک گروپ نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کی تھی۔ اسی علاقے میں مارچ کے مہینے میں دوبارہ دھماکہ ہوا جس میں 22 افراد مارے گئے۔ اس کارروائی کی ذمہ داری کالعدم جماعت الاحرار نے قبول کی تھی۔

گزشتہ جمعے کو ہونے والے دھماکے کی ذمہ داری بھی لشکر جھنگوی العالمی نے قبول کی تھی۔

دوسری جانب پارہ چنار کا طے شدہ دورہ کرنے والے پاکستانی سپہ سالار خراب موسم کی وجہ سے کرم ایجنسی نہیں جا سکے ہیں۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *