میں مصنفہ ہوں،تاریخ پر سمجھوتہ نہیں کروں گی،تمہینہ درانی

میں مصنفہ ہوں،تاریخ پر سمجھوتہ نہیں کروں گی،تمہینہ درانی

اسلام آباد:وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی جے آئی ٹی پیشی کے موقع پر وفاقی وزیر داخلہ کا ساتھ جانا وزیر اعظم ہاؤس کے لیے پریشانی کا باعث بن گیا ہے۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام کو معروف پاکستانی اخبار سے ملنے والی معلومات کے مطابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی اہلیہ تہمینہ درانی کی کچھ پالیسیوں کی وجہ سے دونوں خاندانوں میں دراڑ دکھائی دے رہی ہے جس کے بعد میاں شہباز شریف اور نواز شریف آئندہ انتخابات میں الگ الگ انتخابی مہم چلانے کا سوچ رہے ہیں۔

ذرائع کے مطابق شہباز شریف کی جے آئی ٹی پیشی کے موقع پر ان کی اہلیہ تہمینہ درانی کا کہنا تھا کہ وراثتی جائیداد کا نام لے کر وزیر اعظم نے جائیداد اکھٹی کی اور مصیبت سارے خاندان پر آئی ہے۔

ذرائع کے مطابق تہمینہ دورانی نے کہا کہ میں شریف خاندان کی بہو ہونے سے پہلے ایک ادیب اور مصنفہ ہوں ،تاریخ پرسمجھوتہ نہ کیا ہے اور نہ کروں گی۔ اور وزیر اعلیٰ پنجاب کی اہلیہ نے اپنے صاحبزادے حمزہ شپباز شریف سے عہد لیا ہے کہ  وہ ناجائز طور پر میاں نواز شریف کا دفاع نہیں کریں گے۔

ذرائع کا کہنا ہے شہباز شریف کی زوجہ تہمینہ دورانی اور بیگم کلثوم نواز کے درمیان تلخ جملوں کا استعمال بھی ہوا تاہم شہباز شریف نے مداخلت کی۔

دوسری جانب ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیر اعلیٰ پنجاب جے آئی ٹی پیشی کے دوران وراثت کی تقسیم اور میاں شریف کی جانب سے حسین نواز کو تحفے پر اربوں کی جائیداد دینے کی ساری تفصیل بتا آئے ہیں۔

 

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *