انڈین اہلکار نے ملٹری پریزنٹیشن کے دوران پورن فلم چلادی

انڈین اہلکار  نے ملٹری پریزنٹیشن کے دوران پورن فلم چلادی

نئی دہلی: بھارتی فوج کے مختلف معاملات میڈیا میں آ کر فورس کی پیشہ ورانہ مہارت پر سنجیدہ سوال اٹھاتے رہے ہیں ایسے ہی ایک حالیہ واقعہ میں بھارتی فوج کے افسر نے تربیتی پریزینٹیشن کی جگہ پورن فلم چلا دی۔

بھارتی خبررساں ادارے پی ٹی آئی یعنی پریس ٹرسٹ آف انڈیا کے مطابق اپنی نوعیت کا یہ عجیب شرمناک واقعہ اس وقت پیش آیا جب انڈین بارڈر سیکیورٹی فورس کے ایک افسر نے فوجی مشقوں کے دوران پریزینٹیشن دینا تھی۔

بی ایس ایف کے خصوصی ملٹری سیشن کے موقع پر آفیشل لیپ ٹاپ پر پریزینٹیشن کی جگہ فحش فلم چلانے کا واقعہ فیروزپور میں 77ویں بٹالین کے ہیڈکوارٹر میں پیش آیا۔

خصوصی سیشن کے دوران لیپ ٹاپ آن کر کے پروجیکٹر سے کنیکٹ کیا گیا تو تقریبا 90 سیکنڈ تک فحش فلم کے مناظر پردے پر چلتے رہے۔

اس واقعہ کے بعد بی ایس ایف کے ڈی آئی جی آر ایس کٹاریا کا کہنا تھا کہ معاملے کا جائزہ لے رہے ہیں جس کے بعد تفصیلات سامنے لائی جائیں گے۔

انڈین فوج کے افسر کے مطابق بی ایس ایف کے ڈسپلن کو متاثر کرنے والے کسی بھی کام کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔

یاد رہے کہ بی ایس ایف اہلکار کی جانب سے تربیتی پریزینٹیشن کی جگہ جنسی فلم چلانے کا واقعہ انڈین سرحدی فورس کے اہلکار کی جانب سے ناقص راشن اور بدسلوکی کو ایکسپوز کرنے کی ویڈیو کے دو ماہ بعد پیش آیا ہے۔

تیج بہادر یادیو نے اپنی ویڈیو میں سینئر افسران پر الزام عائد کیا گیا تھا کہ وہ اہلکاروں کا راشن مارکیٹ میں فروخت کر دیتے ہیں جب کہ ناقص اشیا استعمال کروائی جاتی ہیں۔

مارچ میں انڈین فوجی افسران پر بدسلوکی کا الزام عائد کرنے والا ایک بھارتی اہلکار مہاراشٹر میں اپنی بیرک میں مردہ پایا گیا تھا۔ انڈین فوجی افسران کے رویوں کو برطانوی دور کا قرار دینے والی ویڈیو نشر کرنے والا رائے میتھیو 25 فروری کو اپنے آرٹلری سسٹم سے پراسرار طور پر غائب ہو گیا تھا۔

رواں برس جنوری کے مہینے میں پاکستانی فوج نے ایک ایسے انڈین اہلکار کو واپس لوٹایا تھا جس نے اپنے کمانڈر کی بدسلوکی سے تنگ آکر خود کو پاکستانی فوج کے حوالے کر دیا تھا۔

Shahid Abbasi

Shahid Abbasi is a Founder and Editor of Pakistan's fastest growing indepednent and bilingual news website, pakistantribe.com

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *