راشدلطیف نے سہواگ کوتگنی کاناچ نچادیا

راشدلطیف نے سہواگ کوتگنی کاناچ نچادیا

کراچی: پاکستان اور بھارت کے درمیان کرکٹ مقابلوں کے موقع پر میڈیا کی دنیا میں بھی ایک مقابلے کی فضا رہتی ہے۔ چیمپئنز ٹرافی کے حالیہ میچ میں پہلی بار میڈیا کے محاذ پر مقابلے کی اس فضا میں الزامات،طعنوں اور دعووں کے بجائے حقائق پر بات ہوتی رہی۔

رجحان میں اس تبدیلی کی وجہ جو بھی رہی ہو لیکن اس بدلے ہوئے ماحول کو خاصا پسند کیا گیا،لیکن بھارتی ٹیم کے سابق اوپنر وریندر سہواگ خود کو خاموش نہ رکھ سکے اور کرکٹ میچ کے دوران کمنٹیٹر کے فرائض سرانجام دیتے ہوئے پاکستانی ٹیم کو بیٹا اور بنگلہ دیشی ٹیم کو پوتا کہہ ڈالا۔

اس مرحلے پر پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان اور مایہ ناز وکٹ کیپر راشد لطیف میدان میں آئے اور وریندر سہواگ کو لفظوں ہی سے تگنی کا ناچ نچا دیا۔

بھارت میں انٹرنیٹ یوزرز نے راشد لطیف کے ویڈیو جوابات پر شور تو مچایا لیکن چونکہ ابتداء سہواگ کی جانب سے کی گئی تھی اس لئے وہ زیادہ مضبوط دلائل کے بجائے اگر مگر تک ہی محدود رہے۔

راشد لطیف نے اپنے مخصوص کاٹ دار جملوں پر مشتمل ویڈیو پیغام میں سہواگ کو مخطاب کر کے کہا کہ ماضی میں بہت سے انڈین کھلاڑیؤں کے ساتھ کھیلنے کا اتفاق رہا،ان سے عزت ملی بھی اور عزت کی بھی،لیکن تم پتہ نہیں کہاں سے آگئے۔

سہواگ کی کرکٹ مہارت کا پردہ چاک کرتے ہوئے راشد لطیف کا کہنا تھا کہ تم جب لیکوئڈ فارم میں تھے ہم اس سے وقت بھی یونیفارم یعنی کرکٹ کٹ پہنا کرتے تھے۔

پاکستان اور بھارت کے درمیان کرکٹ نہ ہونے کا پس منظر بیان کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ تم ڈرپوک ہونے کی وجہ سے آج ہی نہیں بھاگ رہے بلکہ ماضی میں جب شارجہ میں کھیلا کرتے تھے تو بھی تمہیں کبھی جمعے کو کھیلنے پر اعتراض ہوتا تھا کبھی کوئی اورمسئلہ۔

وریندرسہواگ کو منہ توڑ جوابات پر مشتمل ویڈیوز سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر کیا آئیں،پاکستانی ہی نہیں انڈین اور دیگر ممالک کے اردو سمجھنے والوں نے بھی سہواگ کی بدزبانی کی مذمت کی۔ تاہم بدزبانی اور یاوہ گوئی کو پسند کرنے والے کچھ انڈینز نے ناصرف راشد لطیف کے لئے انتہائی ناروا زبان استعمال کی بلکہ ان کی ویڈیو کو سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر رپورٹ بھی کیا تاکہ وہ ڈیلیٹ ہو جائیں۔

سری لنکا،بھارت میچ میں انڈیا کی 7 وکٹوں سے شکست کا ذکر کرتے ہوئے راشد لطیف کا کہنا تھا کہ سری لنکا نہ وہ کیا جس سے خون نکلے جا رہا ہے لیکن پتہ نہیں چل رہا کہ کٹا کدھر ہے۔

یاد رہے کہ سہواگ کی جانب انڈیا سری لنکا میچ سے قبل سری لنکن ٹیم کے لئے ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ یہ ماچس کی وہ ڈبیہ ہے جس میں آگ ختم ہو چکی ہے،آج بھارت کو سیمی فائنل کا ٹکٹ مل جائے گا۔

انہوں نے سہواگ کو مشورہ دیا کہ اپنے بورڈ کے ہاتھ سے چوڑیاں اترواؤ تاکہ وہ کھیلنے پر رضامند ہم کہیں بھی کھیلنے پر راضی ہیں،مگر مرد بن کر سامنے آؤ اور کھیلو تو سہی۔

راشد لطیف کی جانب سے جواب ملنے کے بعد سہواگ سے کوئی بات نہ بن پڑی تو وہ خاموش رہے البتہ کرکٹ شائقین کی جانب سے ٹوٹر پر بار بار ٹیگ کئے جانے کے بعد جان چھڑانے کیلئے انتا کہہ کر رخصت ہو لئے کہ بے معنی الفاظ سے بامعنی خاموشی بہتر ہے۔

یاد رہے کہ وریندر سہواگ ماضی میں بھی اپنے پھکڑ پنے پر مشتمل جملوں اور جنسی میلان رکھنے والے بیانات کی وجہ سے ہدف تنقید بنتے رہے ہیں۔

@RashidLatifOfcl : @virendersehwag ji apko moo ki bawaseer hogye hai. Elaj kar wana ho tou ajana idhar Delhi sai lahore dur nahi. pic.twitter.com/dwQ3gtgGgU

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *