تھریسامے کونئی حکومت بنانے کی اجازت مل گئی

تھریسامے کونئی حکومت بنانے کی اجازت مل گئی

لندن: برطانوی وزیراعظم تھریسا مے کو کل ہونے والے عام انتخابات میں بڑی سیاسی جماعت کے طور پر پوزیشن برقرار رکھنے پر حکومت بنانے کی اجازت مل گئی۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام ورلڈ ڈیسک کے مطابق برطانوی وزیراعظم تھریسا مے انتخامی مہم میں مبینہ ناکامی اور چند سیٹیں کھونے کے باوجود ہائوس آف کامنز میں 318 نشستوں کے ساتھ اکثریت برقرار رکھی ہے۔

تھریسامے کی کنزرویٹو پارٹی المعروف ٹوری پارٹی کو حکومت بنانے کے لئے مزید 8 ارکان چاہئیں جب کہ ان کی اتحادی ڈیموکریٹک یونینسٹ پارٹی کے حالیہ انتخابات میں 10 ارکان کامیاب ہوئے ہیں۔

جمعرات کو حکومت بنانے کی اجازت حاصل کرنے کے لئے ملکہ برطانیہ سے ملاقات کرنے کے بعد واپسی پر 10 ڈائوننگ اسٹریٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے تھریسامے کا کہنا تھا کہ وہ آئندہ حکومت بنائیں گی۔ ہم اپنی اتحادی ڈی یو پی کے ساتھ مل کر کام کریں گے۔

تھریسا مے کا کہنا تھا کہ 10 دنوں میں بریگزٹ مذاکرات کا آغاز ہونا ہے ایسے میں ہم اپنے اتحادیوں کے ساتھ مل کر برطانیہ کو اس مشکل وقت میں مستحکم ملک بنانے کے لئے اپنا کردار ادا کریں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس وقت ہمیں استحکام کی فوری ضرورت ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ مانچسٹر اور لندن حملوں کے بعد انتہا پسند مسلم آئیڈیالوجی سے نمٹنے اور ان کے حامیوں کے خلاف اعلان کردہ اقدامات جاری رکھتے ہوئے یونائیٹڈ کنگڈم کو مستحکم ملک بنانے کی کوششیں جاری رکھیں گے۔

اپنی حکومت کے ایجنڈے کا اعلان کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ آئندہ پانچ برسوں میں ملک کو ایک ایسی جگہ پر لائیں گے جہاں کوئی فرد یا برادری خود کو پیچھے محسوس نہ کرے۔

یاد رہے کہ بدھ کو قبل از وقت ہونے والے عام انتخابات کے بعد ایک 650 رکنی ایوان میں معلق پارلیمان وجود میں آئی ہے جہاں کوئی جماعت 326 کی سادہ اکثریت حاصل نہیں کر سکی ہے۔ تاہم سابق حکمراں جماعت کنزرویٹو پارٹی نے 318 ارکان کے ساتھ خود کو اکثریتی پارٹی کے طور پر برقرار رکھا ہے۔

قبل ازیں اپنی گزشتہ نشستوں میں خاطرخواہ اضافہ کرنے والی لیبر پارٹی کے سربراہ جمی کاربائن کا کہنا تھا کہ تھریسامے کے ووٹ کم ہوئے،نشستیں کم ہوئیں،لوگوں کا تعاون اور اعتماد کم ہوا،یہ کسی کے بھی واپس جانے کے لئے کافی علامتیں ہیں۔

قبل از وقت عام انتخابات کا اعلان کرتے وقت مبصرین کا خیال تھا کہ تھریسامے اپنی پارلیمانی اکثریت کو مستحکم کر کے بریگزٹ معاملے کے مذاکرات شروع کریں گی تاہم حالیہ نتائج ان کے لئے ایک ڈرائونی تعبیر بنے ہیں جہاں انہیں نے مجموعی ووٹوں میں تو اضافہ کیا لیکن پارٹی کی سادہ اکثریت کھو گئیں۔

Shahid Abbasi

Shahid Abbasi is a Founder and Editor of Pakistan's fastest growing indepednent and bilingual news website, pakistantribe.com

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *