بیڈروم میں ٹی وی بچیوں کے لئے تباہ کن اثرات

بیڈروم میں ٹی وی بچیوں کے لئے تباہ کن اثرات

لندن: بچوں کا اپنے بیڈ روم میں مسلسل ٹی وی دیکھنا ان میں موٹاپے کا باعث بنتا ہے جس کا زیادہ امکان لڑکیوں میں پایا جاتا ہے۔

پاکستان ٹرائب ہیلتھ ڈیسک کے مطابق یونیورسٹی کالج لندن میں کی گئی تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ جن لڑکیوں کے کمرے میں ٹیلی ویژن ہوتا ہے ان میں موٹے ہونے کے امکانات بہت زیادہ ہوتے ہیں جب کہ یہی خطرہ لڑکیوں کی نسبت لڑکوں میں کم پایا جاتا ہے۔

ماہرین کے مطابق 7 سال تک عمر کی لڑکیوں کے کمرے میں ٹی وی کی موجودگی سے ان میں موٹاپے کا خطرہ 30 فیصد تک بڑھ جاتا ہے۔

اس کے برعکس اسی عمر میں لڑکوں کے کمرے میں ٹی وی سے ان میں موٹاپے اور وزن کی زیادتی کا خطرہ 20 فیصد تک ہوتا ہے۔

لیڈ ریسرچر ڈاکٹر انجنا ہیلمن کا کہنا ہےکہ ان کی تحقیق اس بات کو ظاہر کرتی ہے کہ کم عمر لڑکے لڑکیوں کے کمروں میں ٹی وی کی موجودگی چند سال بعد ان میں موٹاپے اور وزن کی زیادتی کا سبب بن جاتی ہے۔

تحقیق میں یہ بات بھی سامنے آئی کہ جن لڑکیوں کا وزن پہلے سے زیادہ تھا وہ مسلسل ٹی وی دیکھنے سے مزید بڑھا جب کہ زیادہ وزن والے لڑکوں میں ایسی کوئی علامت نہیں پائی گئی۔

ڈاکٹر ہیلمن کا کہنا ہے کہ اس کی اہم وجہ لڑکوں کا لڑکیوں کے مقابلے میں جسمانی طور پر زیادہ متحرک ہونا ہے کیونکہ لڑکے ٹی وی دیکھتے وقت اچھل کود کرتے ہیں جب کہ لڑکیاں ایک جگہ ساکت ہوکر ٹی وی میں گم رہتی ہیں۔

ماہرین نے خدشہ ظاہر کیا ہےکہ اس خطرے کا سبب بننے کی اہم وجہ نیند کی کمی بھی ہوسکتی ہے،بچوں کے کمرے میں ٹی وی موجود ہو تو وہ نیند کی پرواہ کیے بغیر رات گئے تک اسے دیکھتے ہیں۔

 ماہرین کا کہنا ہے کہ جن بچوں کے کمرے میں ٹی وی موجود ہو ان کے والدین کو چاہیے کہ وہ بچوں پر کڑی نگرانی رکھیں اور انہیں رات دیر تک ٹی وی دیکھنے سے منع کریں۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *