امریکا 70 سال سے ایلینز پر پردہ ڈال رہا ہے

امریکا 70 سال سے ایلینز پر پردہ ڈال رہا ہے

نیو میکسیکو: نیو میکسیکو سے تعلق رکھنے والے ریٹائرڈ ڈپٹی شیرف نے اپنے ایک حالیہ انٹرویومیں آڑن طشتری اور خلائی مخلوق کے حوالے سے امریکا کے جھوٹ کا پردہ چاک کر دیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق ریٹائرڈ ڈپٹی شیرف چارلس فوگس نے اپنے انٹرویو میں کہا کہ اس نے 70 سال پہلے نیو میکسیکو میں ایک اڑن طشتری جو کہ تقریبا 100 فٹ لمبی تھی گرتے ہوئے دیکھی۔

ان کا کہنا ہے کہ انہوں نے خود اپنی آنکھوں سے امریکی فوجیوں کو اس اڑن طشتری سے ایلینز کو نکال کر طبی امداد دیتے ہوئے دیکھا ۔

ڈپنی شیرف کا کہنا ہے کہ وہ ایلینز تقریبا  5 فٹ لمبے تھے،ان کی جلد ایسی تھی جیسا کہ وہ سورج کے بہت قریب رہے ہوں،ان کے پاوں ہمارے پیروں جیسے ہی تھے،ان کے سر پیچھے کی جانب سے بڑے اور آگے کی جانب سے چھوٹے تھے۔

ڈپٹی شیرف کا کہنا ہے کہ اس بات کو 70 سال گزر چکے ہیں اور امریکا نے آج تک اس حوالے سے عوام کو دھوکے میں مبتلا رکھا ہوا ہے۔

یاد رہے کہ امریکا نے اس واقع کے بعد فورا ایک نیوز جاری کر دی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ یہ ناسا کی جانب سے خلا ء میں چھوڑا جانے والا ایک  سرویلنس بالون تھا جو گر کر تباہ ہو گیا ہے۔

 

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *