پولیس اور حکومت،سندھ میں اجازت اجازت کا کھیل عروج پر

پولیس اور حکومت،سندھ میں اجازت اجازت کا کھیل عروج پر

کراچی: پاکستان کے جنوبی صوبے سندھ میں امن و امان کی ناقص صورتحال ایک طرف تاہم صوبائی حکومت اور پولیس سربراہ کے درمیان اجازت اجازت کا کھیل عروج پر ہے۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام کے نمائندہ کراچی کے مطابق جمعہ کو اس کھیل کی نئی قسط کے طور پر سامنے آنے والے حکمنامے میں انسپکٹر جنرل سندھ پولیس کو پابند کیا گیا ہے کہ وہ بغیر اجازت پولیس ہیڈکوارٹر سے باہر نہ جائیں۔

وزیراعلی سندھ کے دستخطوں سے جاری ہونے والے حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ آئی جی سندھ صوبائی پولیس ہیڈکوارٹرز چھوڑنے سے پہلے تحریری طور پر اس کی اطلاع دیں گے۔

قبل ازیں سنگین الزامات کی وجہ سے وزارت داخلہ سے ہٹائے جانے اور پھر دوبارہ وزیرداخلہ بنائے جانے والے سہیل انورسیال نے پولیس افسران کے لئے حکم نامہ جاری کیا تھا وہ آفس چھوڑنے کی اجازت وزارت داخلہ سے لیں گے۔

اس سے بھی پہلے سہیل انور سیال کے دوبارہ وزیرداخلہ بنائے جانے کے بعد آئی جی سندھ نے پولیس افسران کو ہدایت کی تھی کہ وہ کسی اجلاس میں شرکت کے لئے پولیس سربراہ سے تحریری اجازت حاصل کریں گے۔

سندھ باالخصوص کراچی میں اجازت اجازت کا یہ کھیل ایک ایسے وقت میں کھیلا جا رہا ہے جب سنگین جرائم میں ملوث پولیس افسر وسیم بیٹر بیرون ملک سے واپس آکر جرائم کے نیٹ ورک کو منظم کرنے کی کوششیں شروع کرچکا ہے،اس حوالے سے سامنے آنے والی میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ وسیم بیٹر کو اعلی سیاسی شخصیات کی پشت پناہی حاصل ہے۔

کراچی سمیت صوبے کے مختلف علاقوں سے شائع ہونے والے سندھی،اردو اور انگریزی اخبارات کی رپورٹس کے مطابق صوبائی دارالحکومت سمیت دیگرعلاقوں میں امن و امان کی صورتحال اب بھی سوالیہ نشان جب کہ انتظامی حوالوں سے صوبہ بجلی،پانی اور ضروریات زندگی کے سنگین بحران کا شکار ہے۔

پیپلزپارٹی کی سندھ حکومت کئی بار حالیہ پولیس سربراہ اے ڈی خواجہ کو عہدے سے برطرف کرکے ان کی خدمات وفاق کے حوالے کرنے کا اعلان کرچکی ہے تاہم عدالتی احکامات کی وجہ سے وہ اپنی پوزیشن پر موجود ہیں۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *