فون ٹیبلٹ،بچوں میں دیر سے بولنے کا سبب

فون ٹیبلٹ،بچوں میں دیر سے بولنے کا سبب

نیویارک: آج کے دور کے بچے پیدا ہونے ہی سب سے پہلے جو چیز اپنے سامنے دیکھتے ہیں وہ اسمارٹ فون ہوتا ہے جس سے اس کی خالہ،پھوپھی،یا چاچا،چاچی میں سے کوئی تصویر بنا رہا ہوتا ہے،اس لئے بچوں کو ان چیزوں سے دور رکھنا مشکل ہوتا ہے کیونکہ یہ والدین سے سارے مسائل کا حل بن جاتا ہے مثلا،کھانے میں ضد کرنے والے بچے کو موبائل پکڑا کر کھانا کھلائیں یا دوائی پلائیں یا اور کسی حوالے سے اس کی ضد دور کروائیں۔

امریکن اکیڈمی آف پیڈیا ٹرک کی جانب سے کی جانے والے ایک تحقیق کے مطابق جن بچوں کو 18 ماہ سے پہلے ہی اسمارٹ فون،ٹیبلٹ یا کسی اور اسکرین کی عادت پڑ جاتی ہے ان میں دیر سے باتیں کرنے کے مسائل جنہیں ڈیلے سپیچ کہا جاتا ہے لاحق ہوتے ہیں۔

ماہرین کی جانب سے اسی حوالے سے 6 ماہ سے 2 سال تک کے 894بچوں پر چار سال پر محیط ایک ریسرچ کی گئی جس میں فون ،ٹیبلٹ وغیرہ استعمال کرنے والے اور اس سے دور رہنے والوں کو شامل کیا گیا ۔

تحقیق کے مطابق جن بچوں کو 18 ماہ سے پہلے ہی موبائل فون ،ٹیبلٹ یا کسی بھی طرح کی اسکرین استعمال کرنے کا موقع مل گیا ان میں دیر سے بولنے کے مسائل پیدا ہوگئے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ والدین کو سختی کے ساتھ اس اصول پر عمل کرنا چایئے کہ وہ کسی صورت بچے کو 18 ماہ سے پہلے فون،ٹیبلٹ یا ٹی وی وغیرہ کے قریب بھی نہ پھٹکنے دیں گئے اور اس مدت کے بعد بھی صرف مناسب وقت کے لئے ان چیزوں کی اجازت دیں گے۔

 

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *