“اب انھیں نتائج کا سامنا کرنا ہو گا”بھارت کی پاکستان کو خطرناک دھمکی

“اب انھیں نتائج کا سامنا کرنا ہو گا”بھارت کی پاکستان کو خطرناک دھمکی

نئی دہلی:بھارت کے وائس چیف آف آرمی اسٹاف لیفٹیننٹ جنرل سارتھ چند نے گیدڑ بھبھکی دیتے ہوئے کہا ہے کہ دو بھارتی فوجیوں کی ہلاکت کا بدلہ اپنی مرضی کے وقت اور مقام پر لیں گے،بھارتی فوج”جو کرے گی”اسے عوام کے سامنے بیان نہیں کیا جاسکتا،پاکستانی فورسز نے ہمارے فوجیوں کے ساتھ ایسا کیا ہے اور انہیں نتائج کا سامنا کرنا ہوگا۔

پاکستان ٹرائب کو دستیاب اطلاعات کے مطابق2بھارتی فوجیوں کی ہلاکت کے بھارتی دعووں کی پاکستان کی جانب سے سختی سے تردید کے باوجود بھارت کے وائس چیف آف آرمی اسٹاف لیفٹیننٹ جنرل سارتھ چند کا کہنا ہے کہ بھارتی فوج جو کرے گی اسے عوام کے سامنے بیان نہیں کیا جاسکتا۔

عوامی تقریب میں خطاب کرتے ہوئے بھارتی وائس چیف آف آرمی اسٹاف نے گیدڑبھبھکی دی کہ اس کا بدلہ بھارت اپنی مرضی کے وقت اور مقام پر لے گا۔

پاکستان کی جانب سے دعوں کو تردید کو نظرانداز کرتے جنرل سارتھ چند کا کہنا تھا وہ کہتے ہیں ان کی فورسز نے ایسا نہیں کیا، تو پھر ایسا کس نے کیا ہی انہوں نے یہ کیا ہے اور انہیں اس بات کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے نتائج کا سامنا کرنا ہوگا۔

یاد رہے کہ رواں ہفتے کے آغاز میں بھارتی فوج نے الزام عائد کیا تھا کہ پاکستانی سیکیورٹی فورسز نے ایل او سی کے قریب ہندوستانی پوسٹوں پر راکٹ اور مارٹر فائر کیے اور گشت پر تعینات2بھارتی فوجیوں کی لاشیں مسخ کردیں جبکہ پاک فوج نے ان دعوں کو سختی سے مسترد کرتے ہوئے کہا کہ نہ ہی پاک فوج نے ایل او سی پر جنگ بندی کی خلاف ورزی کی اور نہ ہی بھارت کے الزام کے مطابق باٹ(بارڈر ایکشن ٹیم)نے ایل او سی کے بٹل سیکٹر پر حملہ کیا اس حوالے سے بھارتی وزارت خارجہ، نئی دہلی میں پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط کو طلب کرکے فوجیوں کی لاشوں کی بے حرمتی پر اپنا احتجاج بھی ریکارڈ کرا چکی ہے۔

اس سلسلے میں یکم مئی کو پاکستان اور بھارت کے ڈائریکٹر جنرل ملٹری آپریشنز(ڈی جی ایم اوز)کے درمیان ہاٹ لائن پر بھی رابطہ ہوا جس میں دو بھارتی فوجیوں کی لاشوں کی بے توقیری کے معاملے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

مذکورہ رابطے میں واضح کیا گیا کہ پاک فوج اعلیٰ اور پیشہ ور ہے،پاک فوج کسی بھی فوجی کی بے توقیری نہیں کرتی،چاہے وہ بھارتی ہی کیوں نہ ہو۔

آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں کہاگیا کہ پاکستانی ڈی جی ایم او نے اپنے بھارتی ہم منصب سے مطالبہ کیا کہ وہ اس حوالے سے شواہد فراہم کریں۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *