دس ارب کی آفر!عمران اور شہباز کے دوست بول پڑے

دس ارب کی آفر!عمران اور شہباز کے دوست بول پڑے

اسلام آباد:میڈیا میں کپتان کو دس ارب آفر ملنے پر جہاں خوب ہنگامہ ہوا وہی اب اس کوشش کا آغاز کر دیا گیا ہے کہ کپتان کو وزیراعلیٰ پنجاب یا ان کے بیٹے کے کس دوست کی جانب سے آفر دی گئی تھی،ہر طرف اسی سوال کا چرچا ہے اور سب اس کا جواب جاننے کی کوشش میں ہیں۔

پاکستان ٹرائب کو دستیاب تفصیلات کے مطابق دس ارب روپے کی پیشکش سے متعلق سوال پر عمر فاروق نے قہقہہ لگایا اور کہا کہ یہ ناممکن ہے۔کسی نے ایسی کسی پیشکش کے لیے مجھ سے رابطہ نہیں کیا اور نہ ہی مجھے اس معاملے سے متعلق کوئی علم ہے۔اس کے علاوہ قمر خان بوبی،جو کہ سابق بینکر،ایک بزنس مین اور مالی مشیر بھی ہیں،عمران خان کے قریبی دوست ہیں اور قمر خان بوبی کے شہباز شریف سے بھی قریبی تعلقات ہیں۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان میرے کزن ہیں اور شہباز شریف سے میرے اچھے تعلقات ہیں لیکن میری گذشتہ کئی روز سے وزیر اعلیٰ پنجاب سے ملاقات تک نہیں ہوئی لہٰذا ان کے ذریعےعمران خان کو پیسوں کی پیشکش کرنے کی بات کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔میں نے اخبار میں اس سے متعلق خبر دیکھی اور سوچا کہ عمران خان سے اس سے متعلق پوچھوں گا۔عمران خان کو چاہئیےکہ وہ اس معاملے کو کنفیوژن دور کرنے کے لیے تفصیلات بتا دیں۔

مبشر المعروف موبی بھی عمران خان اور شہباز شریف کے مشترکہ دوستوں میں شمار ہوتے ہیں۔مبشر ٹیکسٹائل کا کاروبار کرتے تھے لیکن اب وہ مختلف شہروں میں رئیل اسٹیٹ کا کاروبار کرتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ مجھے اس بارے میں کوئی معلومات نہیں ہیں اور نہ ہی میں کبھی اس طرح کی ڈیلز کا حصہ بنا ہوں انہوں نے کہا کہ نہ تو اس حوالے سے کسی نے مجھ سے رابطہ کیا اور نہ ہی میں نے اپنے اس پاس ایسی کوئی بات سنی ہے۔

مزید برآں رئیل اسٹیٹ ٹائیکون ملک ریاض سے جب اس حوالے سے رابطہ کیا گیا تو ان سے بات نہیں ہو سکی۔ البتہ ملک ریاض کے ترجمان نے کہا کہ ملک ریاض کا اس معاملے سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ ترجمان کرنل خلیل نے کہا کہ میں یہ بات گارنٹی سے کہہ سکتا ہوں کہ ایسی کسی بھی آفر کے لیے ملک ریاض سے رابطہ نہیں کیا گیا۔ ملک ریاض کے بھی عمران خان اور شہباز شریف سے قریبی تعلقات ہیں۔

اس رپورٹ کے مطابق عمران خان اور شہباز شریف کے ممکنہ مشترکہ دوستوں میں سے کسی نے بھی عمران خان کو 10 ارب روپے آفر کرنے کی کی حامی بھرنے کی بجائے اس بات سے لاتعلقی کا اظہار کیا جس کے بعد اب ضرورت ہے کہ پی ٹی آئی چئیر مین عمران خان اس مشترکہ دوست کا نام خود ہی بتا دیں جس نے شریف خاندان کی طرف سے پانامہ کیس پر چُپ رہنے کے لیے عمران خان کو دس ارب روپے کی آفر کی تھی۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *