قربانی کا بکرا بننے سے انکار،راؤ تحسین بھی وزیر اعظم کے مقابل آگئے

قربانی کا بکرا بننے سے انکار،راؤ تحسین بھی وزیر اعظم کے مقابل آگئے

اسلام آباد:وزیر اعظم کے سابق پرنسپل انفارمیشن راؤ تحسین نے اپنے عہدے سے برطرفی کے نوٹیفیکیشن کو عدالت میں چیلنج کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام کے مطابق راؤ تحسین کا کہنا تھا کہ مجھے عہدے سے ہٹایا جانا حکومت کا استحقاق ہے،جس کمیشن کی رپورٹ پر مجھے ہٹایا گیا اسے چیلنج کروں گا۔

انہوں نے کہا کہ کمیٹی میں کوئی ایسا شخص نہیں تھا جس کا میڈیا سے تعلق ہو، مجھے صرف اتنا بتایا جائے کہ برطرفی کا فیصلہ کیسے اور کس بنیاد پر کیا گیا؟۔

راؤ تحسین کا کہنا تھا کہ ن کا کہنا تھا کہ میں خود کو آئین ، قانون اور حکومت کے احکامات کا پابند سمجھتا ہوں،کسی ایسے عمل کا حصہ نہیں ہوں جس سے حب الوطنی یا پیشہ ورانہ اہلیت پر حرف آئے۔

یاد رہے ڈان لیکس کی تحقیقاتی کمیٹی کی جانب سے پیش کی گئی سفارشات کو منظور کرتے ہوئے وزیر اعظم نے راؤ تحسین اور معاون خصوصی طارق فاطمی کو عہدے سے برطرف کرنے کا احکامات جاری کیے تھے۔

اس سے قبل طارق فاطمی بھی عہدے سے استعفیٰ دینے سے انکار کر چکے ہیں جب کہ مختلف حلقوں کی جانب سے آواز اٹھائی جا رہی ہے کہ کہیں حکومت بے قصور لوگوں کو قربانی کا بکرا تو نہیں بنا رہی۔

 

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *