دوران حمل اینٹی ڈپریشن ادویات،بچے آٹزم کا شکار

دوران حمل اینٹی ڈپریشن ادویات،بچے آٹزم کا شکار

پیرس:   ایک نئی تحقیق کے مطابق جو حاملہ خواتین دوران حمل اینٹی ڈپریشن والی ادویات استعمال کرتی ہیں ان سے پیدا ہونے والے بچوں کے آٹزم کا شکار ہونے کے امکانات 83 فیصد تک بڑھ جاتے ہیں۔

بیکچر یونیورسٹی کی جانب سے شائع ہونے والی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جو خواتین حاملہ ہونے سے پہلے اینٹی ڈپریشن ادویات استعمال کرتی ہیں ان سے پیدا ہونے والے بچوں میں آٹزم کا شکار ہونے کے  73 فیصد جبکہ جو خواتین دوران حمل یہ دوائیں استعمال کرتی ہیں ان میں 83 فیصد زیادہ امکانات پائے جاتے ہیں۔

ڈاکٹر فلورینس گریس کا کہنا ہے کہ سی خواتین  دوران حمل ڈپریشن کا شکار ہوتی ہیں جس کی وجہ سے وہ اینٹی ڈپریشن ادویات استعمال کرتی ہیں جو ان کے پیٹ میں موجود بچے کے لئے نقصان دہ ثابت ہوتی ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ حاملہ خواتین میں اینٹی ڈپریشن ادویات اور آٹزم کا شکار ہونے والے بچوں میں تعلق پایا گیا ہے جبکہ یہ ادویات حمل سے پہلے بھی مسائل کا باعث بنتی ہیں۔

 

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *