گورنرسندھ محمدزبیرکوراحیل شریف کے متعلق بیان مہنگاپڑگیا

گورنرسندھ محمدزبیرکوراحیل شریف کے متعلق بیان مہنگاپڑگیا

اسلام آباد: پاکستان کے جنوبی صوبے سندھ کے ن لیگ سے تعلق رکھنے والے گورنر محمدزبیر کو کراچی کے حالات صحیح کرنے کا 100 فیصد کریڈٹ نواز شریف کودینے کا بیان انہیں پڑگیا۔

نمائندہ پاکستان ٹرائب کے مطابق مذکورہ بیان پر شدید ردعمل ظاہرکرتے ہوئے تجزیہ کاروں اور مبصرین نے اسے بے وقت کی راگنی قرار دیا ہے۔

امتیاز عالم کا کہنا تھا کہ 55 فیصد کریڈٹ دیا جاسکتا ہے لیکن 100 فیصد نہیں بنتا۔

پی ٹی آئی کے وائس چئیرمین شاہ محمودقریشی کا کہنا ہے کہ راحیل شریف کے متعلق ایسی بات درست نہیں اگر نہیں۔ وفاقی حکومت آپریشن کا فیصلہ کرلیتی اور فوج آمادہ نہیں ہوتی تو کیا ہوسکتا تھا،لہذا ہمیں یہ نہیں بھولنا چاہئے کہ کس نے حقیقی کردار ادا کیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت نے بھی اپنا کردار ادا کیا۔ لیکن تجزیہ کرتے وقت یاد رکھنا چاہئے کہ آرمی چیف یا ڈی جی رینجرز نے کتنی بار گرائونڈ کا وزٹ کیا اور کتنی باروزیراعظم وہاں گئے۔

نجی ٹی وی اینکرکاشف عباسی کا کہنا تھا کہ یہ بات درست ہے کہ کراچی آپریشن کا کریڈٹ وفاقی حکومت کو بھی جاتا ہے لیکن 100 فیصد ان کے کھاتے میں ڈال دینادرست نہیں۔ ہم کہہ سکتے ہیں کہ معاملے کا 40 فیصد کریڈٹ ن لیگ اور 60 فیصد فوج کو دیا جاتا ہے۔ کراچی میں ٹارگٹ کلنگ کے ذریعے 14 ہزار لاشیں گر چکی تھیں،چونکہ آپریشن کراچی میں ہونا تھا اور پی پی پی کے پاس کوئی آپشن نہیں بچاتھا اس لئے آپریشن ہوا۔

سلیم بخاری کا کہنا تھا کہ 3 برسوں میں جنرل راحیل شریف نے نوازشریف سے 112 ملاقاتیں کی ہیں،کوئی بھی راحیل شریف سے ان کا کریڈٹ نہیں لیاچھین سکتا۔ ن لیگ میں جنرل راحیل شریف کے حوالے سے واضح مخاصمت موجود تھی۔ انہوں نے کہا کہ راحیل شریف کواکلوتا کریڈٹ جاتا ہے کہ انہوں نے ان قوتوں کو چیلنج کیا جن کے بارے میں کہاجاتا تھا کہ وہ حکومتوں کی بغلوں میں موجود رہتے تھے۔ کراچی آپریشن کا معاملہ بلاشبہ مشترکہ معاملہ تھا ہم 30 فیصد کریڈٹ وفاق اور 70 فیصد فوج کو دے سکتے ہیں۔

یاد رہے کہ جمعرات کوگورنر سندھ کا کہنا تھا کہ ملک میں آپریشن کی تاریخ بہتر نہیں رہی لیکن کراچی آپریشن پر وزیراعظم نوازشریف نے سب کو ساتھ لیا اور مشاورت سے یہ آپریشن شروع کیا گیا،آپریشن کا 100 فیصد کریڈٹ وزیراعظم نوازشریف کو جاتا ہے۔

اسدعمر کا کہنا تھا کہ آپریشن ضرب عضب کا معاملہ سب کے سامنے ہے جہاں حکومت کو بھی آئی ایس پی آر کی پریس ریلیز سے معاملہ کا علم ہوا۔ اگرآپ کریڈٹ دینا چاہئیں تو یہ پھرتمام جماعتوں کوکریڈٹ دیا جاتا ہے۔انہوں نے کہا کہ راحیل شریف ایک قومی ہیرو ہے،میاں صاحب کا قد دوسروں کو چھوٹا کرنے سے بڑا نہیں ہوگا۔

ںجی ٹی وی اینکرکامران شاہد کا کہنا تھا کہ معاملے کا کریڈٹ فوج کو اس لئے دینا ہوگا کہ کوئی سیاسی حکومت ایم کیو ایم کے مرکز پرکارروائی کر کے وہاں سے دہشت گردوں کو پکڑ نہیں سکتی تھی۔ باقی معاملات پر دبائو برداشت نہیں کرسکتی تھی لیکن سیکیورٹی اداروں نے یہ کرکے دکھایا۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی بیرسٹرظفراللہ کا کہنا تھا کہ کراچی آپریشن تمام سیاسی جماعتوں کا مشترکہ معاملہ تھا تاہم ضرب عضب آپریشن کومحض آرمی کا فیصلہ کہنا اورحکومت کی لاعلمی کے متعلق اسدعمر کی بات درست نہیں ہے۔ میں ذاتی طور پرایسی چارمیٹنگزمیں شریک رہا جہاں ضرب عضب آپریشن کے متعلق تفصیلات طے کی گئیں۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *