مارفین دماغی مسائل کے لئےکارگر نہیں

مارفین دماغی مسائل کے لئےکارگر نہیں

سڈنی: ایک نئی تحقیق کے مطابق دماغی بے چینی اور نشے کے اثرات کو کم کرنے کے لئے پوری دنیا میں استعمال کی جانے والی مارفین ان مسائل کے حل کے لئے کارگر نہیں ہے۔

یونیورسٹی آف سڈنی سے تعلق رکھنے والے مارہرین کے مطابق یاداشت کو کنٹرول کرنے والے دماغی خلیات اوپیڈز کی کارکردگی کو قدرتی طریقوں سے بڑھانا بے چینی،خوف اور نشے کے اثرات کو کم کرنے میں مدد دے سکتا ہے جبکہ مارفین اس سلسلے میں زیادہ فائدے مند نہیں ہے۔

لیڈ ریسرچر لینا بیلے کا کہنا ہے کہ دماغی مسائل کے لئے دنیا بھر میں استعمال کی جانے والی ادویات جیسا کہ بینزوڈایازیفونیز اور 5 ایچ ٹی ریوپٹیک،زیادہ پر اثر نہیں ہیں۔

دماغی مسائل کے حل کے لئے سب سے پہلے دماغ سے خوف اور تشویش کو دور کرنا پڑتا ہے اور مریضوں کو اسی حوالے سے ادویات استعمال کروائی جانی چایئے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ دماغ سے خوف،تشویش اور ناخوشگوار یادوں کو نکالنے کے لئے مارفین وغیرہ کارگر نہیں ہیں کیونکہ یہ ان چیزوں کو کم کرنے کے بجائے بڑھاتی ہیں اور مریض کے ساتھ یہ مسائل جوں کے توں رہتے ہیں۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *