انٹرنیٹ فلٹربچوں کو فحاشی،تشدد دیکھنے سے نہیں بچاتا

انٹرنیٹ فلٹربچوں کو فحاشی،تشدد دیکھنے سے نہیں بچاتا

لندن: انٹرنیٹ کی خرابیوں سے بچوں کو بچانا ممکن نہیں ہے اگرچہ اس حوالے سے کوششیں کی جاتی ہیں مگر اس حوالے سے کوئی نہ کوئی ایسی چیز ہوتی ہے جس کی وجہ سے ایسا مکمل طور پر ختم ہونا ممکن نہیں۔

ایک برطانوی رپورٹ کے مطابق والدین اپنے بچوں کو انٹرنیٹ پر فحش مواد،خوفناک ویڈیوز اور تشدد پر اکسانے والا مواد دیکھنے کی وجہ سے پریشان رہتے ہیں مگر انہیں اس چیز سے بچانا پوری طرح ممکن نہیں ہے۔

بچوں کو ایسا مواد دیکھنے سے بچانے کے لئے بنائے جانے والے فلٹرز کار گر نہیں اور اس کی وجہ یہ ہے بچے اسمارٹ فونز زیادہ استعمال کرتے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق فلٹر یہ نہیں جان سکتے کہ نوجوان کس سے چیٹ کر رہے ہیں جبکہ شراب،منشیات اور جنسی تعلقات کے حوالے سے  فلٹرز کو اوور بلاک کرنا ناممکن نہیں۔

ماہرین کے مطابق والدین گھر میں انٹرنیٹ فلٹرز کا استعمال کر کے مطمئن ہو جاتے کہ ان کے بچے کوئی مضر مواد نہیں دیکھ سکیں گے مگر آج کے نوجوانوں کی بڑی تعداد اسمارٹ فون استعمال کرتی ہے اور انٹرنیٹ کا زیادہ استعمال گھر سے باہر کرتے ہیں جس کی وجہ انہیں روکنا ممکن نہیں تاوقتیکہ وہ خود ان چیزوں سے دور رہنا پسند کریں۔

 

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *