الیکشن کیلئےبلاول کورکشہ والے کا چیلنج

الیکشن کیلئےبلاول کورکشہ والے کا چیلنج

لاڑکانہ: نئی سیاسی صف بندی کے تحت اچانک اتوار کو پارٹی انتخابات کر کے آئندہ چار برسوں کے لئے چئیرمین منتخب ہونے والے بلاول بھٹو زرداری کو انتخابی میدان میں فری ہینڈ ملنے کا امکان کم نظر آتا ہے۔ اس کا ثبوت پاکستان تحریک انصاف،جماعت اسلامی اور جے یو آئی تو مقابلہ کرنے کا اعلان کر کے دے ہی چکی ہیں تاہم اب پی پی پی کے چئیرمین کو لاڑکانہ کے ایک رکشہ والے نے بھی چیلنج کیا ہے۔

پاکستان ٹرائب ڈاٹ کام کے مطابق اپنی گزربسر کے لئے رکشہ چلا کر معاش کا انتظام کرنے والے لاڑکانہ کے رہائشی نے بلاول کے مقابل الیکشن میں بطور امیدوار حصہ لینے کا اعلان کیا ہے۔

گلزار علی کا کہنا ہے کہ وہ لاڑکانہ سے قومی اسمبلی کے حلقے این اے 204 سے آئندہ ہونے والے انتخابات میں حصہ لیں گے۔

پی پی پی اور اس کی قیادت کی گزشتہ کارکردگی سے شاکی گلزار علی سے پوچھا گیا کہ آپ رکشہ چلاتے ہیں الیکشن کیسے لڑیں گے،جیت سکیں گے؟ ان کا جواب تھا کہ انتخابات میں حصہ لینا ہی میری جیت ہو گی اگر نتائج مجھے ہارا ہوا بھی دکھائیں تو میں یہ ثابت کرسکوں گا کہ ہمیں کچھ نہیں ملا،ہمیں صرف استعمال کیا گیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پارٹی کے لوگ خواہ ضلع کے ہوں یا تعلقہ اور سٹی کے دھوکے کے سوا کچھ نہیں کرتے،میری عمر اکتالیس برس ہے،بی اے کر رکھا ہے،لیکن اب بھی میں رکشہ چلا رہاہوں۔ میں انہیں یہ کر کے دکھائوں گا کہ غریب بھی ایوان میں آسکتا ہے۔

لاڑکانہ کی آٹو رکشہ ڈرائیور لیبر یونین کے صدر اور رکشہ ڈرائیور گلزار علی کا کہنا تھا کہ مجھے یہاں کے سارے مزدور،ڈرائیور اور پسہ ہوا طبقہ ووٹ دے گا۔ ان لوگوں کے اہل خانہ کو بھی شامل کر لیں تو میرے پاس اس وقت بھی 50 ہزار ووٹ موجود ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ جب تک بی بی زندہ تھیں ہمیں پوچھتی بھی تھیں اور خیال بھی رکھتی تھیں لیکن جب سے آصف زرداری صدر بنے ہیں ہمیں ایسے پھینک دیا گیا گویا ہم پارٹی ورکر ہی نہیں تھے اور پیپلزپارٹی کو ووٹ ہی نہیں دیتے تھے۔

کراچی سے تعلق رکھنے والے صحافی امتیاز چانڈیو کے ساتھ گلزار احمد کی گفتگو کی ویڈیو سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر بہت زیادہ مقبولیت حاصل کر رہی ہے۔

یاد رہے کہ آصف علی زرداری کی خودساختہ جلاوطنی ختم کرکے پاکستان واپس آنے کے بعد پیپلزپارٹی کی قیادت نے دونوں باپ بیٹے کو ضمنی انتخابات میں بطور امیدوار شریک کر کے اسمبلیوں میں لانے کا اعلان کیا ہے۔ اس مقصد کے لئے بلاول لاڑکانہ سے خالی کروائے جانے والی نشست پر الیکشن لڑیں گے۔

شاہد عباسی

پاکستانی صحافی اور ڈیجیٹل میڈیا اسٹریٹیجسٹ شاہد عباسی، پاکستان ٹرائب کے بانی، ایڈیٹر ہیں۔ پاکستان کے اولین ڈیجیٹل میڈیا صارفین میں سے ایک شاہد عباسی بلاگنگ اور خارزار صحافت کے علاوہ اپنے کریڈٹ پر دو ناولز بھی رکھتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *