ترکی میں اغواء ہونے والے پاکستانیوں کے پیچھے کون تھا؟اصل کہانی منظر عام پر

ترکی میں اغواء ہونے والے پاکستانیوں کے پیچھے کون تھا؟اصل کہانی منظر عام پر

گوجرانوالہ:ترکی میں اغواء ہونے والے پاکستانیوں کی تشدد سے بھرپور ویڈیواسی ایجنٹس نے لڑکوں کے اہل خانہ تک پہنچاءیں جنھوں نے غریب پاکستانیوں کو ترکی بھجوایا تھا۔

پاکستان ٹراءب کو دستیاب اطلاعات کے مطابق گوجرانوالا سے تعلق رکھنے والے لڑکوں کی ترکی بھجوانے والے ایجنٹس نے ہی اہلخانہ تک تشدد کی ویڈیوز پہنچائیں اور تاوان کیلئے راضی کرنے کی کوشش کرتے رہے جبکہ بچوں کی جان کو لاحق خطرات کی وجہ سے میڈیا یا حکومتی اداروں سے دور رکھنے کی بھی باربار تلقین کرتے رہے۔

نجی ٹی وی چینل92نیوز کے مطابق چار وں لڑکے گوجرانوالہ کے حافظ آباد روڈ پر ایک ہی محلے میں رہائش پذیر ہیں اور مغوی عابد کے والدنے بتایاکہ ایک لاکھ تیس ہزار روپے کے عوض بچوں کوایک رشتہ دار ایجنٹ کے ذریعے ایک ہفتے میں ترکی پہنچایاگیاجہاں کئی دن تک کام نہیں ملا اور ایجنٹ کے ساتھ ہی مقیم رہے جہاں افغان گروہ کے ہتھے چڑھ گئے۔

لڑکوں کے والدین نے بتایاکہ وہ کرائے پر رہتے ہیں اغواءکاروں نے800لاکھ روپے تاوان طلب کیااور کہاکہ پشاور یا لاہور کی منڈی سے ہنڈی کے ذریعے رقم استنبول بھجوائیں،ہم غریب لوگ ہیں،کرائے پر رہتے ہیں،ہم رقم دینے سے قاصر ہیں ہمیں دھمکی دی گئی کہ اگر کسی سے ذکر کیاتوآپ کے بچوں کے سرقلم کردیں گے۔

ایک سوال کے جواب میں عابد کے والد نے بتایاکہ وہاں بھیجنے والے ایجنٹ ہی ان کے پاس ویڈیوز لے کرآئے ہیں،یہ دسمبر کی10تاریخ تھی ایک دن وہ ہمارے گھر آئے اور اگلے دن پتہ چلاکہ بچے اغواءہوگئے ہیں،ایجنٹوں میں سہیل اور نبیل شامل ہیں۔

نجی ٹی وی چینل کے مطابق ایجنٹ ہی ڈبل ایجنٹ تھے جو اغواءکاروں کیساتھ بھی ملے ہوئے تھے اور ان کی طرف سے پاکستان میں متاثرہ فیملیز کیساتھ یہی ایجنٹ ہی لین دین کی بات آگے بڑھاتے رہے لیکن جب معاملات طے ہوتے دکھائی نہیں دیاتو میڈیا کو اطلاع کردی جبکہ مغوی عابد کے کزن عامررشید کی درخواست پر پولیس نے مقدمہ بھی درج کرلیا۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *